۔38لگژری اشیا کی درآمد پر پابندی کی فہرست جاری

513

اسلام آباد (اے پی پی)وفاقی حکومت نے جن اشیا کی درآمد پر پابندی عاید کی ہے ان میں موبائل فونز، ہوم اپلائنسز ، گاڑیاں، سگریٹس اور چاکلیٹس سمیت 38اشیا شامل ہیں۔ وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ کی طرف سے جاری کی گئی فہرست کے مطابق جن اشیا کی درآمد پر پابندی عاید کی گئی ہے ان میں موبائل فونز، ہوم اپلائنسز ، فروٹس اور ڈرائی فروٹس (ماسوائے افغانستان)، کراکری، نجی اسلحہ و ایمونیشن، جوتے، فانوس اور لائٹنگ (ماسوائے انرجی سیورز)، ہیڈ فونز اور لائوڈ اسپیکرز، ساسز اور کیچپ وغیرہ، دروازوں اور کھڑکیوں کے فریم، سفری بیگز اور سوٹ کیسز، سینٹری ویئر، مچھلی اور فروزن فش، کارپٹس (ماسوائے افغانستان)، پریزروڈفروٹس، ٹشو پیپر، فرنیچر، شیمپو، آٹو موبائلز، کنفیکشنری ، پرتعیش میٹرس اور سلیپنگ بیگز، جیمز اور جیلی، کارن فلیکس، باتھ روم ویئرز / ٹوائلٹریز، ہیٹرز/ بلورز، سن گلاسز، کچن ویئر، ایریٹڈ واٹر، فروزن گوشت ، جوسز، پاستہ وغیرہ، آئسکریم، سگریٹس، شیونگ کا سامان، چمڑے کے پرتعیش ملبوسات، میوزیکل آلات، سیلون آئٹمز جیسے ہیئر ڈرائرز وغیرہ اور چاکلیٹس شامل ہیں۔علاوہ ازیںوزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ لگژری آئٹمز کی درآمد پر پابندی کے فیصلے سے ملک کے قیمتی زرمبادلہ کی بچت ہو گی۔ جمعرات کو اپنے ایک ٹوئٹ میں انہوں نے کہا کہ ہم کفایت شعاری اپنائیں گے ۔ مالی طور پر مضبوط افراد کو اس کوشش میں تعاون کرنا چاہیے تاکہ کم مراعات یافتہ طبقہ کو وہ بوجھ نہ اٹھانا پڑے جو پی ٹی آئی کی حکومت نے ان پر ڈالا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم عزم اور لگن کے ساتھ مل کر چیلنجوں پر قابو پا لیں گے۔