ٍاسرائیل سے تعلقات کے نتائج اچھے نہیں ہونگے،جاوید قصوری

132

لاہور (وقائع نگار خصوصی )امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا کہ امریکن نڑ اد پاکستانی وفد کا دورہ اسرائیل کے حوالے سے میڈیا میں آنے والی خبریں تشویشناک ہیں۔اسرائیل کے حامی سول گروپ ’’شاراکا‘‘ کی دعوت پر اسرائیلی وزیر اعظم سے ہونے والی ملاقات میں مسلم ممالک کے ساتھ تعلقات کو استوار کرنا شامل تھا۔انیلا علی کی سربراہی میں ہونے وا لا یہ دورہ درحقیقت اسرائیل کو تسلیم کرنے کی کوشش ہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ اس دورہ کے حوالے سے اصل حقائق، اس کے اغراض و مقاصد اور نتائج قوم کے سامنے لائے جائیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز امریکن نژاد پاکستانیوں کا دورہ اسرائیل کے حوالے سے میڈیا میں آنے والی خبروں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل ایک دہشت گرد ریاست ہے جس نے نہتے فلسطینوں پر مظالم اور ظلم و ستم کے پہاڑ توڑ ڈھائے ہیں۔اسرائیل نے عرب ممالک کے درمیان میں ناجائز اور غیر قانونی ریاست قائم کر کے مسلمانوں کے سینے میں خنجر گھونپا ہے۔ 1948ء سے اب تک لاکھوں افراد کو شہید کر دیا گیا، ہزاروں خواتین کی بے حرمتی اور لاکھوں بچوں کو یتیم بنا دیا گیا مگر مجال ہے کہ اقوام متحدہ سمیت انسانی حقوق کی بات کرنے والے کسی بھی ایک ملک کو یہ زحمت نہ ہوئی کہ وہ نہتے اور بے گناہ فلسطینوں پر ہونے والی بربریت پر آواز اٹھا سکے۔محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے حکومت پاکستان کو تنبیہ کرتے ہوئے مزید کہا کہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو استوار کرنے کی کوشش کی گئی کو تو نتائج اچھے نہیں ہوںگے۔ماضی میں بھی اس قسم کوششیں کی جاتی رہیں ہیں۔جون 2021 ء سابق وزیر اعظم عمران خان اور قبل ازیں جنرل(ر) پرویز مشرف کے دور حکومت میں بھی اسرائیل سے تعلقات استوار کرنے کی خبریں میڈیا میں آچکی ہیں۔