کراچی میں دھماکا، 3 افراد جاں بحق، متعدد زخمی ، کئی گاڑیاں تباہ

129

 

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کراچی کے علاقے صدر میں دھماکے کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے،5گاڑیاں مکمل طور پر تباہ ہوگئیں جبکہ کئی کو نقصان پہنچا ہے۔پولیس کے مطابق دھماکا مرشد بازار کے قریب ایک بیکری اور ہوٹل کے باہر ہوا جہاں رات کے اس پہر کافی چہل پہل ہوتی ہے۔رات 10 بج کر 52منٹ پر پیش آنے والے اس واقعے میں قریب سے گزرنے والی کوسٹ گارڈ کی گاڑی بھی دھماکے کی زد میں آگئی ۔ڈی آئی جی ساؤتھ کے مطابق اس گاڑی میں سوار2 سرکاری اہلکار بھی زخمی ہیں ۔جناح اسپتال کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شاہد رسول نے بتایاہے کہ زخمیوں میں سے 4 کی حالت تشویشناک ہے۔ انہوں نے بتایا کہ زخمیوں کے جسم بال بیرنگ کے نشانات ہیں۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ دھماکے سے اطراف میں کھڑی گاڑیوں کے شیشے ٹوٹ گئے ہیں۔ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار وں نے متاثرہ علاقے کو گھیرے میں لے لیا ۔جائے وقوعہ کو سیل کر کے بم ڈسپوزل اسکواڈ کو شواہد کے لیے طلب کیا گیا۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق ایک جاں بحق شخص کی شناخت عمر صدیق کے نام سے ہوئی ہے۔اس کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ عمر صدیق جناح اسپتال میں ملازمت کرتا تھا اور بزرٹا لائن کا رہائشی تھا۔ 30سالہ شہروز ولد اصغر اور 21 سالہ حسین ولد محمد سلیم بھی جاں بحق ہونے والوں میں شامل ہیں۔صوبائی وزیر شرجیل میمن نے بتایا کہ تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے شواہد اکٹھے کر رہے ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ نے زخمیوں کو بہترین طبی امداد دینے کی ہدایت کردی۔وزیراعلیٰ سندھ کو آئی جی پولیس کی جانب سے ابتدائی رپورٹ پیش کی گئی جس میں امکان ظاہر کیا گیا ہے کہ دھماکا آئی ای ڈی ڈیوائس سے کیا گیا، جس کے لیے موٹر سائیکل استعمال کی گئی۔وزیراعظم شہباز شریف نے دھماکے میں قیمتی جانوں کے ضیاع اور 13 شہریوں کے زخمی ہونے پر رنج و غم اور افسوس کا اظہا رکرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے ساتھ دلی تعزیت کی۔وزیراعظم شہباز شریف نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کی اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ صوبائی حکومتوں کے ساتھ مل کر عوام اور امن دشمن عناصر کا قلع قمع کریں گے۔وزیراعظم نے وزیر اعلیٰ سندھ کو زخمیوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت بھی کی۔وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کراچی کے علاقے صدر میں ہونے والے دھماکے کا نوٹس لیتے ہوئے چیف سیکرٹری اورآئی جی پولیس سندھ سے دھماکے کی رپورٹ طلب کی۔ انہوں نے دھماکے سے قیمتی جان کے ضیاع پر دکھ اورافسوس کا اظہار کیا اور زخمیوں کی جلدصحت یابی کے لیے دعا بھی کی۔رانا ثنا اللہ نے کہا کہ واقعے کی جامع تحقیقات کے لیے وفاقی حکومت سندھ حکومت کومکمل معاونت فراہم کرے گی۔