آئی ایم ایف کی شرائط ماننا پڑتی ہیں جس سے ملکی سلامتی متاثر ہوتی ہے، وزیراعظم

130

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کی شرائط ماننا پڑتی ہیں جس سے ملکی سلامتی متاثر ہوتی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے قومی سلامتی پالیسی کے عوامی حصے کے اجرا کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل سکیورٹی ڈویژن کو پالیسی بنانے پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں، ملک کو محفوظ بنانے پر مسلح افواج کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، پالیسی میں نیشنل سکیورٹی کو درست طریقے سے واضح کیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ آئی ایم ایف سب سے سستے قرض دیتا ہے، آئی ایم ایف کی شرائط ماننے کی وجہ سے لوگوں پر بوجھ ڈالنا پڑتا ہے، آئی ایم ایف کی شرائط ماننا پڑتی ہیں، مجبوری کی حالت میں آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ملک کی معیشت کمزور ہوگی تو دفاع بھی کمزور ہوگا، کوشش ہے ریاست اور عوام ایک راستے پر چلیں، ہمارے پاس تربیت یافتہ فوج موجود ہے، تمام ریگولیٹرز کو بلا کر بات کی، صورتحال سے آگاہ کیا، ہر ملک میں ریگولیٹر ہوتے ہیں جو عوامی مفاد کیلئے کام کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ قانون کی حکمرانی کے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کر سکتا،  قانون کی حکمرانی نہ ہونے کی وجہ سے مافیاز بن گئے، کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہونا چاہیے، قانون کی حکمران پاکستان کیلئےسب سے بڑا چیلنج ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ سوائے سندھ کے تمام صوبوں میں صحت کارڈ دیا جا رہا ہے، جن صوبوں میں ہماری حکومت ہے وہاں ہیلتھ انشورنس فراہم کر رہے ہیں، صحت کارڈ کے ذریعے ہم  نے ہر خاندان کو تحفظ دیا، ہماری ترجیح سب سے پہلے کمزور طبقے کو تحفظ دینا ہے۔