بھارتی حکومت نے کسان تحریک کے آگے گھٹنے ٹیک دیئے،متنازع قانون واپس لینے کی یقین دہانی

98

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی حکومت نے کسانوں کی تحریک کے آگے گٹھنے ٹیک دیے، متنازع قانون واپس لینے کی یقین دہانی کرادی۔ دہلی کی سرحد پر پچھلے ایک سال سے جاری کسانوں کی تحریک کو ختم کرنے کے لیے حکومت کی جانب سے بھیجے گئے مسودے پر کسان تنظیموں کے درمیان اتفاق ہوگیا ہے اور امید ہے کہ آج جمعرات کو تحریک واپس کرنے پر فیصلہ ہوجائے۔سنیکت کسان مورچہ (ایس کے ایم ) نے کہا کہ حکومت سے ایک ترمیمی مسودے تجویز حاصل ہوئی ہے جسے قبول کرتے ہوئے کسان تنظیموں کے درمیان ایک عام اتفاق ہوگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب حکومت کے لیٹرہیڈ پر دستخط کیے گئے رسمی خط کا انتظار ہے۔ کسان رہنما گرنام سنگھ چڈھونی نے کہا کہ تحریک ختم کرنے کا فیصلہ آج کی میٹنگ کے بعد کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس سے پہلے وزیراعظم نریندر مودی نے تینوں زرعی اصلاحات قانون کو واپس لیے جانے کا اعلان کردیا تھا اور اجلاس کے پہلے دن اس قانون کو منسوخ کرنے کا بل پارلیمنٹ سے منظورہوگیاتھا۔