کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو کے تحت ٹرائلز کا آغاز

99

اسلام آباد(جسارت نیوز)کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو اور لاہور قلندرز کے اشتراک سے ڈائمنڈ گرائونڈ میں ٹرائلزشروع ہو گئے ۔ ٹرائلز میں بٹگرام کے باصلاحیت نوجوان کھلاڑیوں نے حصہ لیا۔ سابق ٹیسٹ کرکٹر عاقب جاوید اور راشد لطیف کی زیرنگرانی ٹرائلز لیے گئے۔ معاون خصوصی برائے امور نواجوان عثمان ڈار نے بطور مہمان خصوصی ٹرائلز میں شرکت کی۔ اس موقع پران کا کہنا تھا کہ کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو ایک تاریخی منصوبہ شروع کیاگیا ہے۔ نوجوانوں کا شکریہ جنہوں نے کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو میں حصہ لیا ۔ انہوں نے کہا کہ بٹگرام میں کرکٹ کی سہولیات نہیں تھیں لیکن ڈائمنڈ گرائونڈ میں آج ٹرائلز منعقد کیے گئے۔ عاطف رانا اور لاہور قلندرز کا ٹیلنٹ ہنٹ کرنے میں وسیع تجربہ ہے۔ لاہور قلندرز کے تجربات سے کرکٹ کے باصلاحیت کھلاڑی سامنے لائیں گے۔پی ایس ایل فرنچائز نے کرکٹ میں اپنا حصہ ڈالا۔ انہوں نے کہا کہ لاہور قلندرز کو شاہین شاہ آفریدی اور حارث روف نہ ملتا تو پاکستان دو باصلاحیت فاسٹ بولرز سے محروم ہوجاتا۔مقصد لاہور قلندرز کے ساتھ مل کر نوجوان باصلاحیت کرکٹرز کو پاکستان کے لیے تیار کرنا ہے،نوجوانوں نے وزیراعظم عمران خان سے سب سے پہلے روزگار کی بات کی،نواجوانوں نے ہنر سکھانے اور کھیلوں کے حوالے سے بھی وزیراعظم عمران خان سے ڈیمانڈ کی۔ معاون خصوصی نے کہا کہ صوبوں اور فیڈریشن کے ساتھ مل کر کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو کو اگے لے کر جانا چاہتے ہیں۔ پاکستان میں اسپورٹس کلچر کو دوبارہ واپس لانا ہے،15 سے 29 سال تک کے نوجوان پاکستان میں 5 کروڑ ہیں،ایک کروڑ باصلاحیت کھلاڑیوں کو کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو کے ذریعے سامنے لانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ باصلاحیت کھلاڑیوں کی لسٹ بنا کر میں خود وزیراعظم عمران خان کو دوں گا، کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو کے اختتام پر وزیراعظم عمران خان کے ساتھ کھلاڑیوں کی میڈلز کی تقریب رکھی جائے گی،اگلے اولمپکس کو ٹارگیٹ کرنا ہے تو 11 سال کے بچے کے ساتھ ڈیولپمنٹ کا کام کرنا ہوگا ۔ عثمان ڈار نے کہا کہ کوشش ہے کہ مختلف کھیلوں کے لیجنڈز کی خدمات کامیاب جوان اسپورٹس ڈرائیو میں لیں،مجھے کرکٹ کا بے پناہ شوق تھا۔ کاش میں بھی کرکٹ کھیلتا۔ اس موقع پر لاہور قلندرز کے عاطف رانا نے کہا کہ جہاں کھیلوں کو فروغ دینے کی بات ہو تو لاہور قلندرز پیچھے نہیں رہ سکتا۔