سیالکوٹ واقعے نے حکومت کی رٹ چیلنج کی ہے ، جاوید قصوری

94

لاہور (نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ سیالکوٹ کا واقعہ انتہائی دلخراش اور افسوسناک ہے، اس کی مکمل تحقیقات کرتے ہوئے مکمل حقائق قوم کے سامنے لائے جائیں ، اس واقعہ میں ملوث مرکزی ملزمان کا سخت سے سخت سزا ملنی چاہیے۔ کسی بھی شخص کو قانون ہاتھ میں لے کر اس قسم کے اقدام کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔ پولیس کے تاخیر سے پہنچنے کی بھی انکوائری ہونی چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ دین سے دوری معاشرے کی تباہی کی وجہ بنا۔ اسلامی تعلیمات کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔ دین ہمیں صبر اور بر د باری کی تلقین کرتا ہے۔ اسلام میں تشدد اور انتہاپسندی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ ماورائے عدالت اقدام سے ملک میں انتشار اور تشدد کی فضاقائم ہوگی۔ سیالکوٹ واقعے نے حکومت کی رٹ کو چیلنج کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ اگر پولیس بروقت پہنچ جاتی تو یہ واقعہ رونما ہی نہیں ہوتا۔ پولیس نے ایک مرتبہ پھر روایتی نا اہلی کا ثبوت دیا ہے۔ ملک کے پر امن ماحول کو خراب اور اسلامی تشخص کو مجروح کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ موجودہ حکومت کی اولین ذمہ داری ہے ، وہ اس واقعے کی شفاف تحقیقات کو یقینی بنائے ۔ اسلام کے عادلانہ نظام کے خلاف سازش کی جارہی ہے۔ کسی بھی شخص کو آگ میں جلانا قرآن و سنت کے خلاف ہے۔ جرم کرنے والے شخص کو دفاع کا مکمل اختیار حاصل ہے۔ سزائے موت دینا عدلیہ اور ریاست کی ذمہ داری ہے۔ ملک میں قانون کی حکمرانی قائم ہونی چاہئے عدالتوں کو عدل و انصاف کے تقاضے پورے کرنے چاہیںکسی فرد کو بھی یہ اختیار حاصل نہیں ہے کہ وہ کسی انسانی جان کو قتل کرے۔ عدالت میں سماعت کے بعد ایسے کیسز کا فیصلہ ہونا چاہیے۔