پی ٹی آئی دورحکومت میں کتنے وزیر ناقص کارکردگی  کے سبب تبدیل ہوئے؟

159

لاہور : تحریک انصاف کی حکومت کے ساڑھے تین سالہ دور حکومت میں اقتصادی ٹیم میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں کی گئی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پی ٹی آئی کے دور حکومت میں اب تک اسد عمر، عبدالحفیظ شیخ، حماد اظہر اور شوکت ترین کی صورت 4 وزرائے خزانہ بدلے جا چکے ہیں اورشوکت ترین اس وقت مشیر خزانہ ہیں۔

 اب تک چار وزرائے خزانہ کے علاوہ سات چیئرمین ایف بی آر اور تازہ تبدیلی چھٹے سیکرٹری خزانہ کی تبدیلی کی صورت میں سامنے آئی ہے۔سال 2018 میں عارف احمد وفاقی سیکرٹری خزانہ تھے، مارچ 2019 میں انہیں ہٹا کر یونس ڈھاگہ کو یہ عہدہ سونپا گیا، صرف 2 ہی ماہ بعد ایک اور نئی تبدیلی کے ساتھ نوید کامران بلوچ نئے سیکرٹری خزانہ بن گئے۔

اس کے بعد 2020 میں کامران علی افضل کو بطور سیکرٹری خزانہ لگایا گیا، پانچ ماہ بعد پھر قلمدان تبدیل ہوا اور مئی 2021 میں یوسف خان سیکرٹری خزانہ تعینات ہوئے۔ اس وقت حامد یعقوب شیخ بطور ایڈیشنل سیکرٹری انچارچ وزارت خزانہ تعینات ہیں۔

ٹیکس محاصل میں اضافے کے لیے ساڑھے 3 سال میں 7 چیئرمین ایف بی آر بھی تبدیل ہو چکے ہیں۔پی ٹی آئی جب برسر اقتدار آئی تو اس وقت رخسانہ یاسمین چیئرپرسن ایف بی آر تھیں، حکومت نے آتے ہی محمد جہانزیب خان کو عہدہ دے دیا، بعد ازاں شبر زیدی، نوشین جاوید، محمد جاوید غنی اور عاصم احمد کی صورت تبدیلی آئی۔اب ڈاکٹر محمد اشفاق چیئرمین ایف بی آر کے طور پر فرائض سر انجام دے ہے ہیں۔