سندھ حکومت و نجی ادارے دیہات میں منی مائکرو گرڈ لگائیں گے

106

کراچی(اسٹاف رپورٹر )حکومت سندھ دیہاتوں میں بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے نجی اداروں کیساتھ ملکر منی اور مائکرو گرڈ لگانے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے تاکہ ان علاقوں میں شمسی توانائی کے ذریعے بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے ا ن خیالات کا اظہار سیکریڑ توانائی سندھ ابو بکر مدنی نے گذشتہ روز منعقدہ سن گرو کے تحت منعقدہ سیمنار سے خطاب کر تے ہوئے کیا اس موقع پر سیکریڑی توانائی کے علاوہ ایس ٹی ڈی سی کے سی ای او سلیم شیخ، حیسکو کے ڈائریکڑ عرفان احمد، سن گرو پاور کے کنڑی ہیڈ عثمان وحید اور سن گرو کے انڑنیشنل ڈائریکڑ ہاورڈ فو اور دیگر نے بھی خطاب کیا اس موقع پر ابو بکر مدنی نے کہاکہ حکومت عوام کو سستی اور ماحول دوست بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے تمام ذرائع استعمال کر رہی ہے ان میں شمسی توانائی، ہوا، بائیوماس، پن بجلی اور ویسٹ ٹو انرجی شامل ہیں انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت ورلڈ بنک کیساتھ ملکر 400میگا واٹ کے شمسی توانائی کے منصوبے پر کام کر رہی ہے اس کیساتھ10ضلعوں کے 2000 گھروں میں شمسی توانائی کے ذریعے بجلی فراہم کرنے کا منصوبہ شامل ہے انہوں نے کہا کہ سرکاری ہسپتالوں کی چھتوں پر 20 میگاواٹ کے منصوبے پر بھی کام جارہی ہے انہوں نے مذید کہاکہ سندھ کے 13 ضلعوں میں 352سولر پی وی ہائبرڈ سسٹم 225 صحت کے مراکز پر لگائے جا چکے ہیں جبکہ 150میگا واٹ کے منصوبہ بھی شروع کیا جارہا ہے اس موقع پر ایس ٹی ڈی سی کے سی ای او سلیم شیخ نے کہاکہ حال ہی میں انہوں نے 400میگا واٹ ہائبرڈ سولر اور ہوا کے منصوبے کا اہم او یو سائن کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں بجلی کی مہنگی قیمتوں سے بچنے کیلئے شمسی توانائی کے منصوبوں پر مذید تیزی سے کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ ہر گھر کو سستی اور ماحول دوست بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے۔اس موقع پر عرفان احمد نے کہاکہ پاکستان کو تیزی سے شمسی توانائی کو استعمال کرنے کیلئے نئے منصوبے شروع کرنے کی ضرورت ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ اسکا فائدہ اٹھایا جاسکے۔