لاہور ہائیکورٹ،ایک ہفتے کی ماحولیاتی ایمرجنسی لگانے کا انتباہ

82

لاہور(نمائندہ جسارت) لاہورہائیکورٹ نے عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایک ہفتے کی ماحولیاتی ایمرجنسی نافذ کرنا پڑ سکتی ہے۔بدھ کو لاہور ہائیکورٹ میں اسموگ کے خاتمے سے متعلق دائر درخواستوں پر سماعت ہوئی۔ جج نے ریمارکس میں کہا ہے کہ ہمیں ایک ہفتے کی ماحولیاتی ایمرجنسی نافذ کرنی پڑ سکتی ہے ۔ موجودہ حالات میں ایک ہفتے کے لیے اسکول ،پرائیویٹ آفسز بند کرنا پڑ سکتے ہیں ۔لاہور کی حدود میں اسموگ بہت پھیلی ہوئی ہے۔ڈائریکٹر پی ڈی ایم نے عدالت میں بیان دیا کہ کچھ دنوں سے اسموگ میں بہتری آئی ہے۔ عدالت ایک ہفتے کی مہلت دے آئندہ سماعت پر اسموگ میں مزید بہتری آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ موٹر وے پولیس کو انٹر چینج ٹول ٹیکس کے حصول کے لیے لمبی گاڑیوں کی قطاریں بنانے سے متعلق مناسب حکم دیا جائے ۔ عدالت نے لاہور ٹریفک پولیس کی ٹریفک میں بہتری پر تعریف بھی کی۔