لاہور میں ادبی عجائب گھر، ادبی بیٹھک او رچائے خانے کا افتتا ح

31

لاہور(نمائندہ جسارت )وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار کا مجلس ترقی ادب کے آفس کا دورہ، مجلس ترقی ادب میں قائم پنجاب کے پہلے لاہور ادبی عجائب گھر، ادبی بیٹھک او رچائے خانے کا افتتا ح کردیا، ای لائبریری بلاک کے منصوبے کا سنگ بنیاد بھی رکھا۔ وزیراعلیٰ پنجاب سے وزیراعلیٰ آفس میں سابق صدر فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری انجم نثار کی قیادت میں وفدنے ملاقات کی، جس میں تاجر برادری اور صنعتکاروں کو درپیش مسائل کے حل کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔ وزیراعلیٰ نے تاجر برادری اور صنعتکاروں کے جائز مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی اور کہا کہ جلد پنجاب کے تمام چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے عہدیداران سے ملاقات کروں گا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے لاہو ر ادبی
عجائب گھر کا دورہ کیااور شاعر مشرق علامہ اقبالؒ، معروف شعرا اور دانشوروں کی رکھی اشیاء دیکھیں۔ سیکرٹری اطلاعات و ثقافت نے وزیراعلیٰ کو بریفنگ دی۔ صوبائی وزیر ثقافت خیال احمد کاسترو، ترجمان پنجاب حکومت حسان خاور، پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ، ڈائریکٹر مجلس ترقی ادب منصور آفاق، ڈپٹی کمشنر سمیت دانشوروں، شعرا، ادیبوں اور صحافیوں کی بڑی تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے ادیبوں، شاعروں اور دانشوروں سے ملاقات کی، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے ادیبوں اور شاعروں کی فلاح و بہبود کیلیے متعدد اقدامات کیے ہیں۔ مجلس ترقی ادب کے زیراہتمام پنجاب بھر کے ادیبوں اور شاعروںکو ممبرشپ کارڈ جاری کیا جا رہا ہے اور اس اقدام سے ادیبوں اور شاعروں کی رائٹر ویلفیئر فنڈ سے مالی معاونت ممکن ہوگی اور وہ دیگر اسکیموں اور سہولیات سے مستفید ہوسکیںگے۔ انہوں نے بتایا کہ یونیسکو نے لاہور کو سٹی آف لٹریچر قرار دیا ہے، اسی حوالے سے شہر میں لاہور لٹریری پارک کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے۔ مجلس ترقی ادب کے زیر اہتمام ہر سال شاعری اور نثر کی منتخب کتابوں پر ایوارڈ دیے جائیں گے۔ سب سے اعلیٰ نثر، نظم اور غزل پر بھی ایوارڈ دیا جائے گا۔ حکومت پنجاب فروغ ادب کیلیے اردو زبان کا پہلا ای ریڈر پیش کر رہی ہے جس میں ابتدائی طور پر 10 ہزار کتابیں شامل ہوں گی۔ پہلی مرتبہ قلمی نسخوں کی باقاعدہ لائبریری کا قیام عمل میں لایا گیا ہے، اور یہ قلمی نسخے آن لائن بھی شائقین ادب کیلیے میسر ہوں گے۔ آخر میں وزیراعلیٰ کو مجلس ترقی ادب کی جانب سے سووینئربھی پیش کیا گیا۔