وفاق کا سندھ کے 14 اضلاع کیلیے 444 ارب روپے کے ترقیاتی منصوبوں کا اعلان

174

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے  کہ مرکزی حکومت سندھ کے 14 اضلاع میں 444 ارب روپے کے ترقیاتی منصوبے پر کام کرے گی اور سندھ ڈیولپمنٹ پلان کے تحت صوبے کے عوام کا معیار زندگی بلند کیا جائے گا۔

ترقیاقی منصوبوں کے نفاذ پر منعقدہ اجلاس میں وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت سندھ کے 14 اضلاع میں ترقیاتی منصوبوں میں کام کرے گی۔

اجلاس میں وفاقی وزیر ڈاکٹر فہمیدہ مرزا، اسد عمر، حماد اظہر سمیت دیگر عہدیداران نے بھی شرکت کی۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ مذکورہ منصوبوں کا مقصد صوبے میں رہنے والے شہریوں کے سماجی و اقتصادی حالات بہتر کرنا ہے۔

انہوں نے ہدایت دی کہ صوبہ سندھ کے کم ترقی یافتہ دیہی علاقوں کو ترجیح دی جائے اور ان علاقوں میں خوشحالی کو یقینی بنایا جائے۔

انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے سندھ کی ترقی کو نظر انداز کیا ہے۔

ترقیاتی منصوبوں کے نفاذ سے متعلق شفافیت، کام کا معیار اور مقررہ مدت کے حوالے سے وزیر اعظم عمران خان نے متعلقہ اداروں کو کہا کہ حیدر آباد سکھر موٹر وے اور بدین، گھوٹکی، تھر، میر پور خاص، ٹنڈو محمد خان حیدر آباد اور سانگھڑ میں اسپورٹ کمپلکسز کی تعمیر کا کام تیزی سے مکمل کیا جائے۔

ترقیاتی منصوبوں میں سڑکوں، موٹر ویز، ہاؤسنگ، انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کام، آبی وسائل، صحت، ہائر ایجوکیشن، ووکیشنل ٹریننگ، ڈیزاسٹر مینجمنٹ، ریلویز، توانائی اور کھیلوں کی سرگرمیوں سے متعلق منصوبے شامل ہیں۔

حکومت نے 26 نئے پی ایس ڈی پی منصوبے منظور کرتے ہوئے مالی سال 22-2021 کے بجٹ میں ان کے لیے مالیاتی وسائل مقرر کیے ہیں۔

منصوبہ ساز کمیشن نے وفاقی حکومت کے 8 ڈویژن اور اداروں کے 16 ارب 30 کروڑ 40 لاکھ روپے مختص کیے ہیں۔

50اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ سندھ کے 48 منصوبے پبلک سیکٹر ڈیوپلمنٹ (پی ایس ڈی پی) پر مشتمل ہیں اور  منصوبے بغیر پی ایس ڈی پی کے تعمیر کیے جائیں گے جبکہ ان میں 7 پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے منصوبے بھی شامل ہیں۔