ٹیکنالوجی کے استعمال سے چھوٹے بچوں کومزید اچھی تعلیم دی جاسکتی ہے، شفقت محمود

181

 وفاقی وزیر برائے تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ  ٹیکنالوجی کے استعمال سے چھوٹے بچوں کومزید اچھی تعلیم دی جاسکتی ہے حکومت کی کوشش ہے کہ جدیدنظام پورے ملک میں لیکر جائیں اور ایلیٹ سکولز کانظریہ بھی ختم کریں۔اسلام آباد کے ثاقب غنی شہید سکول میں منعقدہ سٹیم لانچنگ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرتعلیم شفقت محمود کا کہنا تھا کہ امید ہے جو ہم اس پراجیکٹ سے سیکھیں گے اور مستقبل میں اس کو اپلائی کرینگے ۔ انہوں نے کہاکہ دوسری جنگ عظیم میں جاپان اور جرمنی مکمل طور پر تباہ ہوگئے تھے اور دوسری جنگ عظیم کے بعد ان ممالک نے تعلیم کے ذریعے بہت جلد ترقی کی اس میں کوئی دورائے نہیں کہ تعلیم کے بغیر ترقی ناممکن ہے۔انہوں نے کہاکہ تعلیم ہمارے لئے نہ صرف ضروری بلکہ ناگزیر ہے ہماری تعلیم کا سسٹم دقیا نوسی پہ چل رہا ہے ہم سارے اس رٹے کی پیداوار ہیں۔ٹیکنالوجی ہر شعبہ میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے شفقت محمودہم سمجھتے ہیں آنے والے وقت میں ٹیکنالوجی کا استعمال بڑھے گا  اب وقت ہے کہ ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جائے ٹیکنالوجی تعلیمی نظام کی بہتری میں اہم کردار ادا کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کورونا میں ہم نے ٹیلی سکول شروع کئے مستقبل میں تعلیمی نظام میں ٹیکنالوجی سے کام لیا جائے گایہ سٹیم بھی اسی کی ایک کڑی ہے یہ سٹیم ٹیکنالوجی اس وقت تیس سکولوں میں ہے ہماری کوشش ہوگی کہ۔یہ ہم دیگر سکولوں میں بھی لے کر جائیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جنوبی کوریا کی تنظیم روبوٹ رن کے صدر وان ہان سانگ نے سٹیم ٹیکنالوجی کی اہمیت کواجاگر کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈی جی فیڈرل ایجوکیشن ڈائریکٹوریٹ اکرام علی ملک کا کہنا تھا کہہمیں اپنی تعلیمی نظام میں تبدیلیوں کی ضرورت ہے سٹم  پراجیکٹ اس وقت ہماری ضرورت ہے اس سے تعلیمی نظام میں تبدیلیاں آسکتی ہیںیہ پراجیکٹ اسد عمر اور شفقت محمود کی سپورٹ سے ممکن ہوامجھے امید ہے وقت گزرنے کیساتھ اس میں مزید بہتری آئے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ہم بہت جلد اس ماڈل کودیگر اداروں میں بھی لے کر جائینگے۔