وزارت خزانہ نے ملکی معیشت پر ماہانہ اپ ڈیٹ آﺅٹ لک رپورٹ جاری کردی

128

وزارت خزانہ نے ملکی معیشت پر ماہانہ اپ ڈیٹ آﺅٹ لک رپورٹ میں بتایا ہے کہ ترسیلات زر، نان ٹیکس آمدنی اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

برآمدات، درآمدات، ایف بی آر محصولات اور بڑی صنعتوں کی پیداوار میں اضافہ ہوا ہے۔ تین ماہ میں ترسیلات زر 12.5 فیصد اضافے سے 8 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئیں۔ رپورٹ کے مطابق ملکی برآمدات 35.2 فیصد اضافے سے 7.2 ارب ڈالر کی سطح تک پہنچ گئی ہیں۔ ملکی درآمدات 64.3 فیصد اضافے سے 17.5 ارب ڈالر کی سطح تک پہنچ گئیں۔

پاکستان کے کرنٹ اکاﺅنٹ خسارے میں 3.4 ارب ڈالر کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ جی ڈی پی کا4.1 فیصد ریکارڈ کیا گیا۔ وزارت خزانہ نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری 4فیصد کمی سے 439.1 ملین ڈالر رہی۔ پورٹ فولیو سرمایہ کاری مثبت رجحان کے ساتھ 979.8ملین ڈالر تک پہنچ گئی۔ مجموعی غیر ملکی سرمایہ کاری مثبت رجحان کے ساتھ 1.31ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔ پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر ستمبر کے تیسرے ہفتے تک 24 ارب ڈالر ہوگئے ہیں۔

اسٹیٹ بینک کے پاس 17ارب18کروڑ ڈالر اور کمرشل بینکوں کے ذخائر 6.82 ارب ڈالر رہے۔تین ماہ میں ٹیکس ریونیو 38.2 فیصد اضافے سے 1396ارب روپے رہا۔ جولائی میں نان ٹیکس آمدنی 51.9 فیصد کمی سے 75ارب رہی۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ ستمبر کے اوائل تک پی ایس ڈی پی کی مد میں 392.7ارب روپے منظورکئے گئے۔ جولائی میں مالیاتی خسارہ بڑھ کر 462ارب روپے کی سطح تک پہنچ گیا۔ دو ماہ میں زرعی قرضے 14.7فیصد اضافے سے 291.9ارب روپے کی سطح پررہے۔ستمبر میں مہنگائی کی ماہانہ شرح 9فیصد ریکارڈ کی گئی۔ 3 ماہ میں مہنگائی کی سالانہ شرح 8.6فیصد ریکارڈ کی گئی۔ بڑی صنعتوں کی شرح نمو اگست میں 12.7فیصد تک پہنچ گئی۔