سوڈانی وزیراعظم کی واپسی ،خودمختار کونسل بنانے کا اعلان

181
سوڈانی وزیر اعظم کی واپسی‘ خودمختار کونسل بنانے کا اعلان

خرطوم (انٹرنیشنل ڈیسک) سوڈان میں وزیر اعظم اور ان کی اہلیہ کو واپس گھر جانے کی اجازت دے دی گئی۔ خبررساں اداروں کے مطابق معزول وزیراعظم عبداللہ حمدوک اپنی رہایش گاہ پر واپس آگئے ہیں،تاہم وہاں فوج کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔ ادھر سوڈانی فوج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح برہان نے ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا ہے کہ ہم سوڈان کی تعمیرو ترقی کے لیے مل کرکام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں سوڈانی قوم کی حمایت میں کھڑا ہونا چاہیے۔ فوج نے سوڈانی قوم کی امنگوں اور خوابوں کی تعبیر کے لیے ہرممکن لچک دکھائی ۔ ہم نے کسی ایک گروپ کے سوڈان کے اقتدارپرقبضے کو مسترد کردیا۔ دارالحکومت خرطوم میں ایک نیوزکانفرنس میں انہوں نے تصدیق کی کہ ہم نے وزرا اور سیاست دانوں کو گرفتار کیا ہے ۔ عبداللہ حمدوک کی صحت اچھی ہے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ عبداللہ حمدوک کی حکومت کو معزول کرنے کا فیصلہ ملک میں خانہ جنگی سے بچنے کے لیے کیا گیا ہے۔ انہوں نے سیاست دانوں پر فوج کے خلاف اشتعال انگیزی کا الزام عائد کیا اور کہا کہ فوج نے سوڈانی عوام کے خوابوں کو شرمندہ تعبیر کرنے کے لیے تمام رعایتیں دی ہیں۔ خبررساں اداروں کے مطابق فوجی سربراہ نے سوڈان میں خودمختار کونسل اور حکومت تشکیل دینے کا اعلان بھی کیا۔ اس سلسلے میں انہوں نے 6اہم فیصلے بھی کیے،جن میں تجارتی اتحاد اور دیگر تنظیموں کو تحلیل کرنا شامل ہے۔ ایک سوال کے جواب میں جنرل برہان نے کہا کہ انہوں نے سوڈان کے سیاسی بحران کے معاملے پر امریکی ایلچی سے بھی بات کی ہے ۔دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ انتھونی بلنکن نے رہائی پانے والے عبداللہ حمدوک سے ٹیلی فون پر بات چیت کی اور رہائی پانے پر مبارک باد پیش کی۔ بلنکن نے کہا کہ سوڈان کی فوج تمام غیر فوجی رہنماؤں کو رہا کرے ۔