علما عبادات کے ساتھ عوام کی اخلاقی تربیت کریں‘ صدر علوی

97

کراچی(نمائندہ جسارت)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ وزیراعظم کا رحمت للعالمین اتھارٹی بنانے کا فیصلہ بہت بڑا قدم ہے، ہمیں اشرف امخلوقات کا درجہ دیا گیا ہے اور ہم قرآن مجید اور اسوہ حسنہ پر عمل کرکے دنیا کی طاقتور ترین قوم بن سکتے ہیں، اس لیے ہمیں اپنی قوم کی تربیت کرنی چاہیے، اس ضمن میں سب سے پہلے علما کرام عبادات کے ساتھ اخلاقیات کی تربیت دیں، حکومت اچھی اور معیاری
تعلیم کے لیے کام کر رہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنر ہائوس میں منعقدہ سیرت النبیؐ کانفرنس سے بذریعہ وڈیو لنک خطاب میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا ایک اہم ستون ہے اور قوم کی تربیت میں اس کا اہم رول ہے، پاکستان کا میڈیا ایک ذمے دار میڈیا ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ کانفرنس میں شریک علما و مشائخ کا شکر گزارہوں، کانفرنس میں معلوماتی اور ایمان کو تازہ کرنے والی گفتگو ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان پاکستان کو ریاست مدینہ بنانے کا تصور رکھتے ہیں اور وہ علما کی مدد کے منتظر ہیں تاکہ ملک کو فلاحی ریاست بنایا جاسکے، اس سلسلے میں ریاست پاکستان کا حکمران آپ کی طرف ہاتھ بڑھا رہا ہے، علما کرام عمران خان کا ساتھ دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم رحمت العالمین اتھارٹی بنا رہے ہیں، یہ اتھارٹی وزیراعظم کو مشورہ دے گی اور تمام عالم اسلام کے علما کرام اس میں شامل ہوں گے لیکن پاکستان کے علما کرام اسے لیڈ کریں گے کیونکہ علما کرام کی مدد کے بغیر یہ ممکن نہیں ہے، اللہ نے ہمیں موقع دیا ہے کہ ریاست مدینہ بنائیں۔ گورنر سندھ نے کہا کہ میرے اللہ نے وزیر اعظم کے دل میں نبی ؐ کی محبت رکھی ہے، جب نبی ؐ کا ذکر آتا ہے ہمارے سر تعظیم میں جھک جاتے ہیں، وزیراعظم ہر جگہ ہمارے نبی ؐ کی بات کرتے ہیں جو بات دل سے کی جائے وہ اثر کرتی ہے، نبیؐ کی تعلیمات اپنانے سے ہی ہم سرخرو ہوںگے۔ انہوں نے کہا کہ بچوں کو ہمیں بتانا ہوگا کہ اپنا رول ماڈل نبیؐ کو بنائیں، اس وقت ہماری حکومت بچوں کو دینی تعلیم دلوا رہی ہے، آج پرائمری سطح پر سیرت النبیؐ پڑھائی جارہی ہے۔