ناموس رسالت کے تحفظ کیلیے تمام دینی قوتوں کو متحد ہونا ہوگا ، لیاقت بلوچ

106

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی و سیکرٹری جنرل ملی یکجہتی کونسل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ تمام دینی قوتوں کو ختم نبوت، ناموس رسالت کے تحفظ اور پاکستان کے اسلامی تہذیبی اور اقتصادی نظام کی اصلاح کے لیے متحد ہونا ہو گا، وگرنہ عالمی اسلام دشمن قوتوں کی چھتری تلے نااہل حکمران اور حکومت کی آستینوں میں چھپا سیکولر طبقہ بدنما گل کھلاتا رہے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے اپنے مفاداتی اور یوٹرن اسلوب حکمرانی سے ملک کے تمام طبقات، اداروں کو ناقابل تلافی نقصان کا شکار کر دیا ہے۔ تحریک لبیک کے ساتھ بار بار حکومت اور ریاست نے وعدے
کیے، معاہدوں کا اعلان کیا، لیکن عمل درآمد نہیں کیا جا رہا۔ بار بار ایک ہی نوعیت کی بحرانی صورت حال ملک کے لیے مشکلات کا باعث ہے۔ حکومت تحریک لبیک کے ساتھ معاہدوں پر عمل کرے۔ قیادت و کارکنان کو رہا کرے، ریاست مدینہ اور رحمت العالمینؐ تقاریب منانے والے حکمرانوں کو بدعہدی زیب نہیں دیتی۔ لیاقت بلوچ نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی تقریریں اور اسلامی اعلانات سے اب عوام دھوکا کھانے کو تیار نہیں۔ حکومت وقف املاک ایکٹ، گھریلو تشدد کے انسداد کے نام پر مسلم خاندانوں کی تباہی کا بل، سیکولر نظام تعلیم کے اقدامات اور انسانی حقوق وزارت کی جانب سے قبول اسلام کے راستے میں رکاوٹ کا بل واپس لے اور حقیقی معنوں میں آئین کے مطابق پاکستان میں قرآن و سنت کی بالادستی کے نظام مصطفیؐ کا نافذ کرے۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ سندھ اور بلوچستان کے عوام وفاق اور صوبوں کے جھگڑوں ، سول جمہوری حکومتوں کی نااہلی، اندرونی خلفشار کی وجہ سے لاتعداد مسائل سے دوچار ہیں۔ بلوچستان میں گوادر کے عوام مسائل کا حل اور سی پیک کے ثمرات چاہتے ہیں، لیکن ناکام اور نااہل حکومت عوام مخالف اقدامات کر رہی ہے۔ جماعت اسلامی عوام کے مسائل اور اسلام کی حکمرانی کی جدوجہد کر رہی ہے۔ 31اکتوبر کو اسلام آباد میں نوجوانوں کا فقید المثال احتجاج ہو گا۔