مستونگ اور ہرنائی میں فورسز کی کارروائیاں ، 15 دہشتگرد ہلاک ، اسلحہ و گولہ بارود بر آمد

170

کوئٹہ (نمائندہ جسارت) بلوچستان کے ضلع مستونگ اور ہرنائی میں سیکورٹی فورسز نے آپریشنز میں کالعدم علیحدگی پسند تنظیم کے 15 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا۔ پہلی کارروائی مستونگ کے علاقے اسپلنجی میں کاؤنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) نے کی۔ سی ٹی ڈی کے ترجمان کے مطابق اسپلنجی کے علاقے روشی کے پہاڑوں میں بلوچ لبریشن آرمی کے کیمپ اور وہاں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر آپریشن کیا گیا‘ یہ کیمپ کوئٹہ سمیت بلوچستان میں دہشت گردی کی حالیہ کئی کارروائیوں میں ایک مرکز اور بی ایل اے کے لانچنگ پیڈ کے طور پر استعمال کیا جا رہا تھا۔ اسے دیگر تنظیموں کے دہشت گردوں کو پناہ دینے کے لیے بھی استعمال کیا جا رہا تھا۔ سی ٹی ڈی ٹیم نے موقع پر پہنچ کر کیمپ کو گھیر لیا۔ دہشت گردوں کو ہتھیار ڈالنے کا کہا گیا مگر انہوں نے اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی۔ سی ٹی ڈی ٹیم نے احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے جوابی کارروائی کی۔ جب فائرنگ رکی تو 9 دہشت گرد مردہ پائے گئے جن کی شناخت کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ترجمان کے مطابق کیمپ سے20 کلوگرام دھماکا خیز مواد، 9 کلاشنکوف ، پرائما کارڈ، ڈیٹونیٹرز، راکٹ لانچر اور اس کے2 گولے برآمد کیے گئے۔ ترجمان نے مزید بتایا کہ نیٹ ورک کے بقیہ ارکان کو گرفتار کرنے کے لیے تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ دوسری کارروائی ضلع ہرنائی کے علاقے جمبرو میں کی گئی۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے بیان کے مطابق خفیہ اداروں کی مصدقہ اطلاع پر ایف سی بلوچستان نارتھ نے فائرنگ کے تبادلے میں بی ایل اے کمانڈر طارق عرف ناصر سمیت 6 دہشت گرد ہلاک کردیے۔ بیان کے مطابق کارروائی کے دوران اسلحہ اور گولہ بارود کا بڑا ذخیرہ بھی برآمد ہوا۔