تاجر برادری کا 26 اکتوبر کو فیض آباد میں دھرنے کا اعلان

180

اسلام آباد: آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اجمل بلوچ نے اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ26 اکتوبر کو پاکستان انجمن تاجران فیض آباد میں دھرنا دے گی۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے اجمل بلوچ نے کہا کہ جب ایف بی آر نے ہمارے مطالبات نہیں مانے تو ہم نے ایک ماہ قبل فیض آباد دھرنے کا اعلان کیا تھا، ہم نے پہلے بھی شاہراہ دستور پر مظاہرہ کیا تھا۔

صدر آل پاکستان انجمن تاجران کا کہنا تھا کہ  ملک بھر سے تاجر فیض آباد پہنچ کر امن احتجاج کریں گے، انتظامیہ 26 اکتوبر کو ہمیں فیض آباد دھرنے کی اجازت دے اور حکومت فیض آباد کو ہمارے مظاہرے کیلئے خالی کرے۔

اجمل بلوچ کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے مطالبات ناجائز نہیں ہیں، حکومت کیوں دوکانوں پر ڈیوائس سیل لگانے پر ضد کر رہی ہے، ڈیوائس کے پیچھے سیلز ٹیکس رجسٹریشن چھپی ہے، چھوٹے تاجر کے لیے یہ نا ممکن ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ  پرویز مشرف کے دور میں بھی یہ کوشش کی گئی جو ناکام ہوئی، بیوروکریسی نے حکومت کا چلنا محال کر دیا ہے، بیوروکریسی کام کرنے کیلئے تیار نہیں ہے۔

صدر آل پاکستان انجمن تاجران کا کہنا تھا کہ  آئی ایم ایف کی شرائط سے تاجر متاثر ہو رہا ہے، حکومت نے ایف بی آر کو پولیس کے اختیار دے دیئے، ہر تاجر ٹیکس ادا کر رہا ہے، ایف بی آر جان بوجھ کر متنازع قوانین بنواتا ہے۔