کالعدم ٹی ایل پی کا مارچ، اسلام آباد میں سکیورٹی ہائی الرٹ، راستے سیل

206

کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) آج بعد نمازِ جمعہ لاہور سے اسلام آباد کی طرف ناموس رسالت مارچ کرے گی جس سے نمٹنے کے لیے پنجاب حکومت نے اسلام آباد جانے والی اہم شاہراہوں کو رکاوٹیں لگاکر بند کر دیا ہے۔

کالعدم ٹی ایل پی کی جانب سے کارکنان اور رہنماؤں کی گرفتاریوں کے خلاف ملک کے مختلف شہروں میں دھرنے جاری ہیں۔ کالعدم تنظیم نے لاہور کے چوک یتیم خانہ کے قریب دھرنا دے رکھا ہے جب کہ لاہور میں پنجاب حکومت کی جانب سے بھی ممکنہ خراب صورتحال کے پیش نظر ہائی الرٹ جاری کردیا گیا ہے۔ شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر سیکورٹی الرٹ کردی گئی ہے اور کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لیے پنجاب پولیس کی بھاری نفری دھرنے کے چاروں اطراف موجود ہے۔

دوسری جانب ٹی ایل پی کے لاہور سے اسلام آباد مارچ سے نمٹنے کے لیے جڑواں شہروں راولپنڈی اور اسلام آباد میں سکیورٹی کو ہائی الرٹ کردیا گیا ہے اور دارالحکومت جانے والی اہم شاہراہوں کو کنٹینرز اور رکاوٹیں کھڑی کرکے بند کردیا گیا ہے۔

لاہور میں دھرنے کے اطراف کے علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بھی معطل ہے۔ شیراکوٹ، نواں کوٹ، سمن آباد، گلشن راوی، اقبال ٹائون اور سبزہ زار کے علاقوں میں موبائل و انٹرنیٹ سروس مکمل معطل کردی گئی ہے۔ واٹر کینن گاڑیاں، اینٹی رائٹٹس فورس، بڑی تعداد میں گیس شیل اور اسپیشل فورسز کے دستے پہنچ چکے ہیں۔ کالی کوٹھی اقبال ٹان، اسکیم موڑ، سوڈی وال، نیازی اڈا اور سمن آباد موڑ سے راستوں کو خاردار تاروں اور کنٹینرز کی مدد سے سیل کر دیا گیا ہے۔ پولیس کی بھاری نفری موقع پر موجود ہے دیگر اضلاع سے بھی نفری لاہور پہنچ چکی کسی بھی وقت گرینڈ آپریشن ہوسکتا ہے۔