ایون فیلڈ ریفرنس، فیصلہ کالعدم قرار دینے کی مریم نواز کی درخواست سماعت کیلئے مقرر

138

اسلام آباد: ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا یافتہ مسلم لیگ (ن) کی رہنما مریم نواز کی ریفرنس کا فیصلہ کالعدم قرار دینے کی درخواست سے اعتراضات ختم کر کے سماعت کے لیے مقرر کردی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویژن بینچ نے قومی احتساب بیورو کی ایون فیلڈ ریفرنس اپیلوں پر روزانہ سماعت اور ریفرنس میں دستاویزات اور سزا ختم کرنے کی متفرق درخواستوں پر سماعت کی۔ مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی جانب سے عرفان قادر عدالت میں پیش ہوئے جبکہ نیب کی جانب سے عثمان غنی، سردار مظفر عباسی، بیرسٹر رضوان اور معظم حبیب عدالت میں پیش ہوئے۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ کوئی درخواست بھی دائر کی گئی ہے، رجسٹرار آفس سے کوئی اعتراضات بھی کیے گئے ہیں۔عرفان قادر نے بتایا کہ جی اعتراضات اٹھائے گئے لیکن گزشتہ روز سے ایک غلط فہمی پھیلائی گئی اس کو واضح کرنا چاہتا ہوں انہوں نے کہا کہ ہماری ایجسیز دنیا کی بہترین ایجنسز ہیں، ہمارے ججز قابل احترام ہیں۔

دوران سماعت شور پر عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ خاموش ہو جائیں نہیں تو عدالت چھوڑ کر باہر چلے جائیں۔عرفان قادر نے موقف اختیار کیا کہ نیب کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کی درخواست ناقابل سماعت ہے، نیب کی درخواست جرمانے کے ساتھ مسترد کی جائے۔

بعد ازاں عدالت نے مریم نواز کی درخواست پر اعتراضات دور کرتے ہوئے درخواست سماعت کے لیے 13اکتوبر کو مقرر کرنے کا حکم دیا۔ علاوہ ازیں نیب کی کپیٹن ریٹائرڈ صفدر کی اپیل پر روزانہ کی بنیاد پر سماعت کی درخواست پر نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 13 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی۔