برطانوی لیبر پارٹی کا اسرائیل پر پابندیوں کا مطالبہ

179
مقبوضہ بیت المقدس: قابض صہیونی فوج فلسطینی نوجوان کو وحشیانہ انداز میں گرفتار کرکے لے جارہی ہے

لندن (انٹرنیشنل ڈیسک) برطانیہ کی لیبر پارٹی نے اسرائیل پر پابندیوں کے اطلاق کی قرارداد منظور کر لی ۔ ملک میں مرکزی حزب اختلاف لیبر پارٹی کی منظور کردہ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل فلسطینی عوام
پر نسلی امتیازیت کی حامل انتظامیہ کااطلاق کر رہا ہے۔ قرارداد میں اسرائیل پر پابندیوں کی حمایت کی اور برطانیہ کی اسرائیل کے ساتھ اسلحہ کی تجارت بند کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔ قرارداد میں اسرائیل کے فلسطینیوں پر حملوں کی مذمت کی گئی۔ دریائے اردن کے مغربی کنارے پر قبضے کے اور غزہ کے گرد محاصرے کے خاتمے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ مقبوضہ فلسطین پر غیر قانونی تجارت کے خاتمے کی بھی اپیل کی گئی ہے۔ قرارداد لیبر پارٹی کو پابند کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتی۔ دوسری جانب اردن کی پارلیمان کے ایوان زیریں ایوان نمایندگان نے اتوار کے روز اسرائیلی فوج کے ہاتھوں غرب اردن اور بیت المقدس میں 5نہتے فلسطینیوں کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے اسرائیل کو لگام دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اردنی پارلیمان کے ارکان نے مقبوضہ مغربی کنارے اور مقبوضہ بیت المقدس میں قابض فوج کے ہاتھوں 5فلسطینیوں کے قتل کو گھناؤنا جرم قرار دیتے ہوئے اس کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ اردنی پارلیمان کی فلسطین کمیٹی کی طرف سے عرب ممالک، علاقائی حکومتوں اور عالمی برادری سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ فلسطین میں اسرائیلی ریاست کے ہاتھوں فلسطینی مسلمانوں اور مسیحیوں کے مقدس مقامات کی بے حرمتی روکیں اور انہیں فراہم کریں۔ اردن کی پارلیمان نے فلسطینیوں کے نمایندہ سیاسی اور قومی دھڑوں پر زور دیا کہ وہ اپنی صفوں میں اتحاد اور یکجہتی کا مظاہرہ کریں فلسطینی قوم کے حقوق سلب کرنے کی تمام مجرمانہ سازشوں کو ناکام بنانے کے لیے اقدامات کریں۔