کراچی کو ہانگ کانگ بنانے کی بھارتی سازش ، خطیر رقم مختص

137

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے افغانستان میں طالبان کی حکومت قائم ہونے کے بعد بھارت کو اربوں ڈالرز کا نقصان پہنچانے اور بھارت کے قائم کردہ تربیتی مراکز ختم ہونے پر پاکستان کے خلاف انتقامی کارروائی کے لیے بھارتی پارلیمنٹ سے پاکستان میں دہشت گردی کے ذریعے تباہی و بربادی کے لیے ایک خطیر رقم جسے ضمنی گرانٹ کہا جاتا ہے منظور کرائی ہے۔ ملکی اور بین الاقوامی میڈیا نے باوثوق ذرائع سے اطلاع دی ہے کہ یہ رقم لگ بھگ 3 ارب ڈالرز کے برابر ہے اس رقم سے نہ صرف کراچی کو ہانگ کانگ بنانے، سندھو دیش کے قیام اور گریٹر بلوچستان بنانے کے لیے دہشت گرد تنظیموں کے کارندوں کو بھاری تنخواہ، جدید اسلحہ، گولہ بارود اور گوریلا وار کی تربیت شامل ہے اور بھارتی میڈیا کو پاکستان کے خلاف منفی پروپیگنڈا کرنے اور امریکا، برطانیہ، اسرائیل، جرمنی، کینیڈا، فرانس، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، جاپان میں تعینات بھارتی سفیروں اور را کے ایجنٹوں کو بھاری رقم ڈالروں میں منی لانڈرنگ کے ذریعے بھیج کر پاکستان کے خلاف خطرناک قسم کی مہم چلائی ہوئی ہے اس ضمن میں قادیانی جماعت کے سربراہ مرزا مسرور احمد سے قادیانی جماعت کے ہیڈکوارٹر لندن میں رابطہ کر لیا ہے جبکہ اسرائیل کے دارالحکومت میں قادیانی جماعت کے امیر سے رابطہ کرکے موساد، سی آئی اے اور را نے مِل کر بھاری رقم جو مبینہ طور پر کروڑوں ڈالرز میں ہے نہ صرف تحریف شدہ جعلی قرآن اور ترجمہ شائع کرایا ہے اور مسلمان سے قادیانی مذہب اختیار کرنے والے لڑکوں کو بھاری رقم دے کر قادیانی لڑکیوں سے شادی کراکر کنیڈا، برطانیہ، جرمنی، فرانس، اُردن، کویت، مشرق وسطیٰ کی تمام ریاستوں میں بھیجا جاتا ہے ان سے باقاعدہ لعین، شیطان اور مردود غلام احمد قادیانی کی تصویر پر نہ صرف حلف وفاداری لیا جاتا ہے بلکہ قادیانی ریاست قائم کرنے کے لیے جدید اسلحہ اور آلات کے ذریعے گوریلا جنگ کی تربیت کافی مہینوں دی جاتی ہے اس مقصد کے لیے بھارت کے مختلف شہروں کے علاوہ عراق کے صوبہ کردستان میں ازابیل، تل ابیب، حیفہ، مغربی جرمنی بھیجا جاتا ہے۔
دوسری طرف کراچی میں دہشت گرد تنظیموں ایم کیو ایم الطاف گروپ، جعلی ایم کیو ایم پاکستان، سندھو دیش قومی موومنٹ اور بلوچستان لبریشن آرمی، لیاری کے دہشت گرد گروپس سے رابطہ کر لیا ہے۔ کالعدم تحریک طالبان (پاکستان) سندھو دیش ریولیشنری آرمی، اور لندن میں ایم کیو ایم الطاف گروپ کے سربراہ الطاف حسین، سندھو دیش مہا تحریک کے جلا وطن رہنما شفیع محمد برفت، بلوچستان لبریشن آرمی کے سربراہ براہمداغ بگٹی، میر حربیار مری اور دوسرے جلا وطن رہنمائوں سے رابطہ کرکے پاکستان کی مسلح افواج، خفیہ ایجنسیوں بشمول آئی ایس آئی، رینجرز ہیڈکوارٹرز، فرنٹیئر کور، پولیس، پاکستان کوسٹ گارڈ، نیول ہیڈ کوارٹر اور ائر ہیڈ کوارٹر پر 2011 جیسے گوریلا حملہ کرنے کی ہدایتیں جاری کی گئی ہیں، را کے حکم پر ایم کیو ایم الطاف گروپ، سندھو دیش کے نام نہاد رہنمائوں اور بلوچستان لبریشن آرمی نے پاکستان کی مسلح افواج اس کی خفیہ ایجنسیوں اور آئی ایس آئی کے افسران و عملے کی فوجی بیرکوں میں خواتین کی عزتیں لوٹتے ہوئے، معصوم نوجوانوں، بچوں کی تشدد زدہ لاشوں، بوڑھوں اور جوانوں کے قتل عام کی جعلی تصویریں بین الاقوامی میڈیا، بین الاقوامی عالمی عدالت انصاف میں پاکستان کے خلاف منفی پروپیگنڈا کے لیے اپنے سفارت کاروں کے ذریعے بھیج کر مصروف عمل ہے جبکہ پاکستان کی وزارت خارجہ کے بیرون ملک سفارت خانوں میں قادیانیوں کی ایک کثیر تعداد موجود ہے اور ان کی کارکردگی ناقص ہے اور وہ جان بوجھ کر بھارت کے میڈیا اور سفارت کاروں کے منفی پروپیگنڈے کے خلاف کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کر رہے ہیں کیونکہ انہیں قادیانی جماعت کے سربراہ مرزا مسرور احمد نے لندن سے خفیہ ہدایتیں جاری کر دی ہیں بھارت اس وقت سلامتی کونسل کا صدر ہے اور امریکا میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی امریکی صدر جوبائیڈن امریکی کانگریس، سینیٹ کے اراکین، پینٹاگون، امریکی سی آئی اے اور خفیہ ایجنسیوں کے چیفس سے ملاقات کرکے پاکستان، چین، روس، افغانستان، ایران، ترکی اور روس سے آزاد ایشیائی ریاستوں کے خلاف زہر اُگل رہے ہیں جبکہ دوسری طرف را، سی آئی اے، موساد، ایم آئی 5، جرمن اور فرانسیسی خفیہ ایجنسیوں نے کراچی اور بلوچستان کو خدانخواستہ پاکستان سے علٰیحدہ کرنے کے لیے گوریلا جنگ شروع کرنے کا عندیہ دیا ہوا ہے اس مقصد کے لیے ایم کیو ایم پاکستان کے قائدین نے کراچی اور اندرون سندھ تحریک نفاذ اُردو مہم شروع کی ہوئی ہے اور اس کے جواب میں جئے سندھ قومی محاذ نے نفاذ سندھی کے لیے پورے سندھ میں تحریک شروع کرا دی ہے۔ راقم الحروف کے سابقہ شہر میرپورخاص (سندھ) سے معتبر ذریعوں نے اہم انکشافات کیے ہیں کہ بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ایما پرکراچی اور اندرون سندھ خونیں فساد زبانوں کے نفاذ پر شروع ہو جائے گا راقم الحروف نے وزیر اعلیٰ سندھ ان کے صوبائی وزراء، مشیران اور سول بیوروکریسی کے افسران کو اختیارات کے ناجائز استعمال، کرپشن اور مجرمانہ سرگرمیوں میں گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔
وزیر اعظم پاکستان عمران خان، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی اور ملٹری انٹیلی جنس اس صورتحال کا فوری نوٹس لیں اور ملوث افراد کو گرفتار کرکے سخت سزائیں فوجی عدالتوں سے دلوائیں ورنہ خدانخواستہ کراچی کو ہانگ کانگ بننے اور بقیہ سندھ کو سندھو دیش بننے سے کوئی نہیں روک سکتا۔