ایگزٹ پول: کرسچن ڈیموکریٹس کو عام انتخابات میں شکست

115

برلن: جرمنی کے عام انتخابات میں 16 سال بعد سوشل ڈیمو کریٹک پارٹی نے اپنی حریف کرسچین ڈیمو کریٹک پارٹی پر سبقت حاصل کرلی ہے، حریف جماعت سوشل ڈیموکریٹکس نے 205 نشستیں حاصل کیں جبکہ حکمران جماعت نے 196 نشستیں حاصل کیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق جرمنی میں گزشتہ روز ہونے والے عام انتخابات کے نتائج آنا شروع ہوگئے ہیں اور ایک مرتبہ پھر جرمنی میں مخلوط حکومت بننے کا امکان ہے، 16 سال سے اقتدار میں رہنے والی جرمن چانسلر انجیلا مرکل کی جماعت کو عام انتخابات میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے جبکہ سوشل ڈیمو کریٹک پارٹی نےحریفوں کے خلاف سبقت حاصل کرلی ہے۔

ایگزٹ پول کے مطابق اتوار کو ہونے والے جرمنی کے عام انتخابات میں انگیلا مرکل کی جماعت کرسچن ڈیموکریٹس اور سوشل ڈیموکریٹس کے درمیان کانٹے کا مقابلہ ہے جبکہ روئٹرز کے مطابق سوشل ڈیموکریٹ پارٹی کے سیکٹری جنرل لارس کلنگ بیل نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی پارٹی کو حکومت کرنے کا مینڈیٹ مل گیا ہے۔

خیال رہے حریف جماعت سوشل ڈیموکریٹکس نے 205 نشستیں حاصل کیں اور ان کی کامیابی کا تناسب 25.7 فیصد رہا، حکمران جماعت نے 196 نشستیں حاصل کیں اور ان کی کامیابی کا تناسب 24.1 فیصد رہا جبکہ انتخابات میں حصہ لینے والی ایک اور جماعت گرین 14.8 ووٹ لیکر تیسرے نمبر پر رہی ہے تاہم اب حکومت بنانے کے لیے سوشل ڈیموکریٹکس کو اتحاد کی ضرورت پڑے گی۔

واضح رہے  انتخابات میں شکست کے باوجود انجیلا مرکل اس وقت تک چانسلر کے طور پر اپنے فرائض انجام دیتی رہیں گی جب تک نئی حکومت تشکیل نہیں ہوجاتی۔