مہران ٹاؤن کے 1401 پلاٹس کی لیز منسوخ، کے ڈی اے

243

کراچی: شہر قائد کے علاقے کورنگی میں واقع مہران ٹاؤن میں غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی فیکٹری پر تحقیقات کے دوران اہم انکشافات، مہران ٹاؤن کے 1401 رہائشی، کمرشل اور انڈسٹریل پلاٹس پر تعمیرات غیر قانونی اور خلافِ ضابطہ ہیں۔

تفصیلات کے مطابق  کورنگی مہران ٹاؤن فیکٹری سانحے کے بعد کراچی ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (کے ڈی اے) نے غیر قانونی تعمیرات کے خلاف آپریشن کا فیصلہ کیا ہے اور کے ڈی اے نے 1401 پلاٹس مالکان کو نوٹس (خطوط) جاری کردیے ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ الاٹیز اصل دستاویزات کے ساتھ لینڈ ڈیپارٹمنٹ میں پیش ہوں۔

کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی (کے ڈی اے) کے ڈائریکٹر لینڈ مینجمنٹ نے اس حوالے سے اخبارات میں اشتہار شائع کرا دیا ہے، ان  کا کہنا ہے کہ قوانین پر عمل نہ کرنے پر تعمیرات کو گرا دیا جائے گا۔

Mehran Town: KDA cancelling allotment of residential plots used commercially

خیال رہے اشتہار میں مہران ٹاؤن اسکیم کے الاٹیز کو ان کے پلاٹ نمبر، الاٹ اراضی کے مجموعی مربع گز رقبے، پلاٹ کی نوعیت اور اس کے غیر قانونی استعمال کی تفصیلات پر مشتمل معلومات فراہم کی گئی ہے۔

واضح رہے کے ڈی اے نے اشتہار کے ذریعے اپنے رہائشی، کمرشل اور انڈسٹریل پلاٹس کو غلط انداز میں استعمال کرنے والے 1401 پلاٹ مالکان یا الاٹیز کو آگاہ کیا ہے کہ ان کے تمام الاٹمنٹ آرڈر اور لیٹر منسوخ کر دیئے گئے ہیں۔

یاد رہے  اخبارات میں شائع شدہ اشتہارات کے مطابق ایسے تمام الاٹیز کو خطوط جاری کر کے بھی آگاہ کر دیا گیا ہے، ان تمام الاٹیز کو ذاتی طور پر ڈائریکٹر لینڈ مینجمنٹ کے رو برو اپنی دستاویزات کے ہمراہ پیش ہونے کے لیے کہا گیا ہے، بصورتِ دیگر قانونی کارروائی کرنے اور تمام عمارتوں کو منہدم کرنے کے کام کا آغاز کرنے سے بھی آگاہ کیا گیا ہے۔

دوسری جانب سانحہ مہران ٹاؤن فیکٹری کے 25دن گزر جانے کے بعد بھی کارروائی تشہیری مہم تک محدود ہے جبکہ کے ڈی اے پلاٹس کی واگزاری کے لیے ٹھوس اقدام میں اب بھی ناکام ہے، مہران ٹاون اوورسیز اسکیم پر بڑے پیمانے پر مافیا قابض ہے۔