مرگی میں ادویات اور ڈیوائسز دورے روک سکتی ہیں، فوزیہ صدیقی

69

کراچی (اسٹاف رپورٹر)ایپی لیپسی فائونڈیشن پاکستان کی صدرڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا ہے کہ مرگی ایک قابل علاج مرض ہے، جس کے مکمل خاتمے کیلیے ادویات کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں مختلف قسم کی سرجری بھی کی جاتی ہیں اور اس کے علاوہ کچھ ایسی ڈیوائسز (Devices) بھی ہیں جو کہ مرگی کے دوروں کو روکنے میں کامیاب ثابت ہوتی ہیں جن کو پاکستان لانے کی کوششیں ہورہی ہیں مگر جو ڈیوائسز پہلے سے دستیاب ہیں ان کے بارے میں بھی آگاہی موجود نہیں ہے۔ وہ ہلٹن فارما کی میزبانی میں ’’مرگی کے مناسب علاج کی تربیت‘‘ کیلیے اسکردو میں منعقدہ ورکشاپ میں شریک معالجین سے خطاب کررہی تھیں۔ڈاکٹر فوزیہ نے کہا کہ اس ورکشاپ کے انعقاد کا مقصد معالجین کی تربیت کے علاوہ ملک میں مرگی کے مرض کی دستیاب ادویات کے درست اور جائز استعمال کی تربیت دینا بھی ہے ۔یہ ورکشاپ ملک کی معروف نیورولوجسٹ اور ایپی لیپسی ایکسپرٹ آغاخان یونیورسٹی اسپتال کی ڈاکٹر فوزیہ صدیقی اور سائوتھ سٹی اسپتال ، کراچی کے ڈاکٹر راشد جمعہ کی زیرنگرانی منعقد کی جارہی ہے جو کہ اس کے کورس ڈائریکٹر بھی ہیں۔ ورکشاپ کے شرکاء سے ڈاکٹر راشد جمعہ، ڈاکٹر میمونہ، ڈاکٹر ٹیپوسلطان، ڈاکٹر محمد واسع اور ڈاکٹر امجد نے بھی خطاب کیا۔ڈاکٹر فوزیہ نے کہا کہ اس ورکشاپ میں اس مرض کی تشخیص کے لیے ای جی ٹیسٹ سے متعلق معلومات اور تربیت بھی دی جارہی ہے ۔