جس معاملے کو اٹھاتے ہیں، اس کے نیچے کرپشن کے پہاڑ کھڑے ہوتے ہیں، فواد چوہدری

226

اسلام آباد: وفاقی وزراء کا کہنا ہے کہ کابینہ ارکان کرپشن میں پڑ جائیں تو قومیں تباہ ہوتی ہیں ، جس معاملے کو اٹھاتے ہیں، اس کے نیچے کرپشن کے پہاڑ کھڑے ہوتے ہیں۔

پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں وفاقی وزیر برائے مواصلات مراد سعید کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ عمران خان سڑکوں کے نہیں کرپشن کیخلاف تھے، عمران خان اس کرپشن کیخلاف تھے جو سڑکوں کے نام پر کی گئی، سڑکوں کے ٹھیکوں میں بہت بڑی کرپشن کی جاتی تھی، 60 ارب روپے کی لاگت سے موٹروے بنائی گئی، موٹر وے مہنگا ترین منصوبہ تھا، یہ رقم باہر سے قرضوں کی شکل میں آرہی تھی، موٹروے کی صرف سود کی رقم 2 ارب ڈالر دی گئی۔

انہوں نے کہا کہ شریف فیملی نے سڑکوں کو کاروبار بنالیا تھا، سڑکوں کے ٹھیکوں میں بہت بڑی کرپشن کی جاتی تھی، جب موٹروے بن رہی تھی نواز شریف فیملی اس وقت لندن میں ایون فیلڈ اپارٹمنٹس خرید رہی تھی، یہ پیسہ کہاں سے آرہا تھا ؟، زرداری اور نواز فیملی نے قرضے کو 27 ٹریلین تک پہنچادیا، پاکستان کے نام پر لیا گیا قرضہ باہر لے جایا جاتا رہا، شریف اور زرداری فیملی نے پیسہ پاکستان سے لیا اور اسے باہر منتقل کیا، انہوں نے لندن اور فرانس میں اربوں روپے ابھی بھی چھپائے ہوئے ہیں، ہم نے تین سال میں دس ارب ڈالر قرض واپس کیا ہے، ابھی بھی پاکستان پر قرضوں کے پہاڑ موجود ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ جس معاملے کو اٹھاتے ہیں، اس کے نیچے کرپشن کے پہاڑ کھڑے ہوتے ہیں، کابینہ ارکان اگر کرپشن میں پڑجائیں توقومیں تباہ ہوجاتی ہیں، شہباز شریف نے کہا ہے ملک میں ہوشربا مہنگائی ہوگئی ہے، شہباز شریف کے 25 ملین ڈالر چپڑاسیوں کے اکاؤنٹس سے آئے۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے مواصلات مراد سعید نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان قرضے لے کر موٹروے بنانے کے مخالف تھے اور ہیں، ن لیگ اور ہمارے دور کے معاہدوں کی تفصیلات ویب سائٹ پر ہیں، وزیراعظم نے ہر جگہ قوم کا پیسہ بچایا ہے۔