انڈس موٹرکمپنی کاپیداواری گنجائش میں 20 فیصد تک کی توسیع کا فیصلہ

149

کراچی ( اسٹاف رپورٹر )انڈس موٹر کمپنی کے سی ای او علی اصغر جمالی نے کہا ہے کہ اپنے صارفین کی جانب سے بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لیے کمپنی اپریل 2022تک پیداواری گنجائش میں 20فیصد تک کی توسیع کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ حال ہی میں ٹویوٹا کی پاکستان میں اعلان کردہ 100ملین ڈالر کی اضافی سرمایہ کاری ہائبرڈ گاڑیوں کی مقامی سطح پر پیداوار کے لیے انویسٹ کی جائے گی جبکہ 30ملین ڈالر کی سرمایہ کاری پلانٹ کی توسیع میں کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہائبرڈ گاڑیوں کی مقامی سطح پر پیداوار سے حکومت کے معاشی اہداف پورے کرنے میں مدد ملے گی ساتھ ہی ماحولیاتی تحفظ کے حکومتی عزم کو پورا کرنے میں بھی معاونت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں انفرااسٹرکچر ہائی برڈ گاڑیوں کے لیے تیار ہے جس سے پاکستان میں روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا ہوں گے۔ علی اصغر جمالی نے کہا کہ ہائی برڈ گاڑیاں ایندھن کے خرچ میں براہ راست 50فیصد کمی کا سبب بنیں گی جن سے کاربن کا اخراج اور ماحولیاتی آلودگی کم کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ انڈس موٹر کمپنی ہمیشہ پاکستان کی آٹو انڈسٹری میں نئی ٹیکنالوجی متعارف کرانے میں قائدانہ کردار ادا کرتی رہی ہے اور پاکستان میں آٹو انڈسٹری کی انجینئرنگ کی بنیاد رکھنے کا سہرا بھی انڈس موٹر کے سر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ہدف ہے کہ پاکستان میں متعارف کرائے جانے والے ہر نئے ماڈل کی کم سے کم 50فیصد گاڑیاں ہائی برڈ ہوں۔ گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ پر تبصرہ کرتے ہوئے علی اصغر جمالی نے کہا کہ شرح مبادلہ میں اضافہ کی وجہ سے قیمتوں کو برقرار رکھنا مشکل ہے، فریٹ کے چارجز اور خام مال کی قیمتوں میں بھی کئی گنا اضافہ ہوچکا ہے۔ یہ عوامل گاڑیوں کی لاگت میں اضافہ کا سبب بن رہے ہیں جو مینوفیکچررز کے قابو سے باہر ہیں۔