سندھ اسمبلی میں ختم نبوت سے متعلق آیات و احادیث لکھوانے پر خراج تحسین

59

ٹنڈوآدم (پ ر) سندھ اسمبلی میں ختم نبوت سے متعلق آیات و احادیث لکھوانے پر خراج تحسین، پی پی اور تحریک لبیک کو مبارکباد، بل پر فوری عملدرآمد کا مطالبہ۔ تنظیم تحفظ ناموس خاتم الانبیاء پاکستان، شبان ختم نبوت سندھ ،پاسبان ختم نبوت پاکستان کے مرکزی رہنمائوں مفتی محمد طاہر مکی،حافظ عبدالرحمن الحذیفی، صاحبزادہ محفوظ الرحمن شمس، حافظ میر اسامہ سموں، حافظ ابراہیم سموں، مفتی نافع مصطفی انڈھڑ، جمعیت علماء اسلام (س) کے مولانا محمد عثمان سموں ودیگر نے سندھ اسمبلی میں تحریک لبیک کے ممبر اسمبلی مفتی قاسم فخری کی جانب سے اسمبلی میں ختم نبوت سے متعلق قرآنی آیات اور احادیث کنندہ کروانے اور آں حضرت ﷺ کے اسم مبارک کیساتھ ’’خاتم النبیین‘‘ لکھوانے کی قرار داد پیش کرنے اور تمام ممبران کی جانب سے منظور کرنے پر مفتی قاسم اور سندھ اسمبلی کے تمام اراکین کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیر آید درست آید، لیکن اس بل کو تعطل کا شکار نہ بنایا جائے، فوری بنیادوں پر اس بل پر عملدرآمد کروایا جائے۔ قادیانیوں کو کافر قرار دلوانا بھٹو کا عظیم کارنامہ تھا۔ اس کارنامے پر پی پی کو سر اٹھا کر چلنا چاہیے۔ سندھ اسمبلی میں یہ قرارداد پی پی والوں کو پیش کرنی چاہیے کہ 7 ستمبر جب بھٹو نے قادیانیوں کو کافرقراردیا اس دن پاکستان میں عام تعطیل ہونے چاہیے۔ علماء نے کہا کہ اب صرف بلوچستان اسمبلی رہ گئی ہے جس کے وزیر اعلیٰ باشرع انسان ہیں، ہمارا مطالبہ ہے کہ فوری طور پر بلوچستان اسمبلی میں بھی ختم نبوت سے متعلق اس قسم کی قرارداد پیش کرکے منظور کروائی جائے۔ مفتی طاہر مکی نے کہا کہ ان شاء اللہ یہ کام افسران بالا کے دفاتر تک میں کیا جائے گا۔