وفاقی کابینہ ،چیف الیکشن کمشنر معاملے پر جارحانہ رویہ اپنانے کا فیصلہ،ٹک ٹاک پر پابندی برقرار

112
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان وفاقی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

اسلام آباد(نمائندہ جسارت) وفاقی حکومت نے اجلاس میں چیف الیکشن کمشنر کے معاملے پر جارحانہ رویہ اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔وزیراعظم عمران خان کی سربراہی میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں ملک کی سیاسی، معاشی صورت حال کا جائزہ اور نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کی جانب سے دورہ منسوخ کرنے سمیت 21 نکاتی ایجنڈے پر غور کیاگیا۔ اجلاس میں ازبکستان کو بزنس ویزا لسٹ میں شامل کرنے، ٹریڈنگ کارپوریشن پاکستان کے چیئرمین، سی ای او ڈریپ اور ریلوے بورڈ ممبران کا تقرر و تعیناتی کی منظوری، خطے کے ممالک سے فلموں کی درآمد، جموں کشمیر اسٹیٹ پراپرٹی بجٹ کی منظوری اور دیگر معاملات زیر غور آئے۔وفاقی کابینہ نے ٹک ٹاک پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ۔کابینہ کے اجلاس میں الیکٹرونک ووٹنگ مشین اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کے معاملے پر بریفنگ لی گئی۔ اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر کی جانب سے وفاقی وزرا کو بھیجے گئے نوٹسز پر بھی گفتگو ہوئی۔اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ کے دوران وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے کہا کہ ہمیں انتخابی اصلاحات کو آگے بڑھانا ہے، یہ نہیں ہوسکتا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق نہ دیں، ہم اوورسیز پاکستانیوں کو ان کا حق دلائیں گے۔ اگلا الیکشن نئی مردم شماری اور نئی حلقہ بندیوں پر ہوگا، مردم شماری کے لیے 18 ماہ کا وقت درکار ہوگا۔