ناشتے کے لیے انڈے، صحت کے لیے اچھے

424

کراچی: انڈے قدیم زمانے سے غذا کا بنیادی حصہ رہے ہیں اور ہمارے کھانوں میں ان کی مسلسل موجودگی کی ایک وجہ یہ ہے کہ یہ ہمیں صحت سے متعلق کئی فوائد فراہم کرتے ہیں جبکہ اُبلے ہوئے انڈے اور آملیٹ پروٹین، کیلشیم، کئی وٹامنز اور غذائی اجزاء کا ذریعہ بھی ہیں۔

بچے ہوں یا بڑے، انڈہ کھانا سب کو ہی پسند ہوتا ہے۔ صبح کا ناشتہ انڈے کے بغیر ادھورا تصور کیا جاتا ہے اور اگر کھانے کے لیےکچھ میسر نہ ہو تو ایسے وقت میں بھی انڈہ ہی کھالیا جاتا ہے۔

بس انڈہ پھینٹو اور آملیٹ بنالویا پھرابال کر کھالو، اس کے علاوہ انڈے آلو کا سالن یا پھر انڈے والا برگر، غرض انڈہ کھانے کےبہت سے طریقے موجود ہیں اور لوگوں میں پسند بھی بہت کیا جاتا ہے۔

اگر انڈے کی افادیت کا ذکر ہو تو دنیا میں بہت کم غذائیں ایسی ہوں گی جو انڈے کا مقابلہ کرسکتی ہوں، ویسے تو انڈے کے بے شمار فوائد ہیں جبکہ ماہرین کہتے ہیں کہ انڈے پروٹین کا ایک اچھا ذریعہ ہیں، انڈوں میں دل کی صحت مند غیر محفوظ شدہ چربی بھی ہوتی ہے اور یہ اہم غذائی اجزاء، جیسے وٹامن بی 6، بی 12 اور وٹامن ڈی کا ایک بہت بڑا ذریعہ ہیں، ناشتے میں انڈوں کو اپنی خوراک میں شامل کرنے کے کچھ فوائد یہ ہیں۔

ماہرین کے مطابق  انڈے کھانے سے ہائی ڈینسٹی لیپوپروٹین (ایچ ڈی ایل) کی سطح بلند ہوتی ہے جسے اچھا کولیسٹرول بھی کہا جاتا ہے اور جو لوگ ایچ ڈی ایل کی سطح زیادہ رکھتے ہیں ان میں دل کی بیماری، فالج اور دیگر صحت کے مسائل کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

تحقیق کے مطابق چھ ہفتوں تک ایک دن میں دو انڈے کھانے سے ایچ ڈی ایل کی سطح میں 10 فیصد اضافہ ہوتا ہے جبکہ جیسے جیسے ہماری عُمر بڑھتی جاتی ہے تو ہمیں اپنی آنکھوں کا بہتر خیال رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے اور انڈے کی زردی میں لوٹین اور زیکسینتھین کی بڑی مقدار ہوتی ہے، جو مددگار اینٹی آکسیڈینٹس ہیں جو آنکھوں میں موتیا  کے خطرے کو کم کرنے میں مدد کرتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ  انڈوں میں وٹامن اے بھی زیادہ ہوتا ہے جو آنکھوں کی صحت کے لیے فائدہ مند ہےجبکہ کولین، انڈوں میں پایا جانے والا ایک ضروری غذائی جزو ہے جو دماغ کی نشوونما اور افعال کو متحرک کرتا ہے۔

ماہرین کے مطابق یہ یادداشت برقرار رکھتا اور ہماری دماغی صحت بہتر کرتا ہے جبکہ یہ غذائی جزو دماغ، عصبی نظام اور دوران خون کے نظام کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔

تحقیق کے مطابق دماغ کے لیے ضروری جزو کولین کینسر کا خطرہ بھی کم کرتا ہے اور اگر خواتین لڑکپن سے ہی انڈوں کے روزانہ استعمال کو اپنی عادت بناتی ہیں تو ان میں بریسٹ کینسر کا خطرہ 18 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔

انڈے میں پائے جانے والے اجزاءکسی بھی دوسری غذا کی بنسبت انڈے سے نسبتاً آسانی کے ساتھ اور بہتر کوالٹی میں حاصل ہوتے ہیں اور باقاعدگی سے انڈہ کھانے والوں میں ان اجزاءکی وجہ سے آنکھوں کی بیماری کیٹاریکٹ کا خدشہ بہت کم ہوجاتا ہے۔

واضح رہے انڈا ایک طاقتور غذا ہے جو پروٹین اور چربی دونوں کا شاندار مجموعہ ہے اور جب روزانہ استعمال کیا جاتا ہے تو، یہ نہ صرف آپ کو طویل عرصے تک بھرا رکھتا ہے بلکہ یہ آپ کے وزن میں کمی کے سفر میں بھی مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔

خیال رہے بے شمار فوائد کے ساتھ ساتھ انڈہ بعض حالتوں میں نقصان دہ بھی ہے، مثلاً اگر آپ کو تیزابیت کی شکایت ہے تو اسے مت کھائیں کریں اور اسی طرح گردے کی پتھری، قولنج، بد ہضمی اور برص جیسے امراض میں انڈے کا استعمال کرنےسے قبل اپنے ڈاکٹر سے مشورہ ضرور کرلیں۔