جیکب آباد کی لیڈی ڈاکٹر سے ڈھائی لاکھ روپے بھتا طلب

77

جیکب آباد (نمائندہ جسارت) جیکب آباد کی لیڈی ڈاکٹر سے ڈہائی لاکھ بھتا طلب ،نہ دینے پر نقصان پہنچانے کی دھمکی،پی ایم اے کی مذمت ملزمان گرفتار نہ کیے گئے تو احتجاج ہو گا، ڈاکٹر اے جی انصاری۔ جیکب آباد کی معروف لیڈی ڈاکٹر اختیار مستوئی سے نامعلوم افرادکی جانب سے فون کرکے ڈھائی لاکھ روپے بھتا طلب کیا گیا، نہ دینے پر نقصان پہنچانے کی دھمکی دی گئی۔ رابطہ کرنے پر لیڈی ڈاکٹر اختیار مستوئی نے بتایا کہ گزشتہ پیر کو مجھے اورمیرے ملازم کو دھمکی آمیز فون موصول ہوا کہ ڈائی لاکھ روپے جمع ہمیں دو اگر جلد نہ دیے تو پھر تمہاری کلینک اور تم سب کو اڑا دیا جائے گا۔ پولیس کو نمبر اور وائس میسج بھی دیا ہے لیکن تاحال پولیس نے کوئی کارروائی نہیں کی، نہ میرا مقدمہ درج کیا جارہا ہے، سخت پریشان ہوں۔ لیڈی ڈاکٹر سے بھتا طلب کرنے اور دھمکانے کے واقعے پر ڈاکٹروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ پی ایم اے سندھ کے نائب صدر ڈاکٹر اے جی انصاری نے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ جیکب آباد کی سینئر گائنا کالاجسٹ اور پی ایم اے جیکب آباد کی نائب صدر سے پیسوں کی زبردستی طلبی غنڈہ گردی ہے، پولیس کو شکایت کے باوجود ملزمان گرفتار نہ کرنا افسوسناک ہے۔ پولیس امن قائم کرنے اور عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ لیڈی ڈاکٹر کو تحفظ فراہم کیا جائے اور دھمکانے والوں کو گرفتار نہ کیا گیا تو ڈاکٹر اور شہری مجبور ہوکر روڈوں پر نکلیںگے۔