حکومت مسئلہ کشمیر پر اپنے غلط موقف سے رجوع کرے،لیاقت بلوچ

244

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی، سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے تھرڈ آپشن پر اپنے غلط مؤقف سے حکومت رجوع کرے اور اقوامِ متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیریوں کے حق خودارادیت کے حصول کو ہی منزل بنایا جائے،عمران خان زبانی دعوئوں، تقریروں کے بجائے متفقہ قومی کشمیر پالیسی بنائیں، بزدلی، تذبذب اور بیرونی دباؤ پر حکمران اور پالیسی ساز ڈی ٹریک ہوکر کشمیریوں کی لازوال قربانیوں کو نقصان نہ پہنچائیں۔ سید علی گیلانیؒ کی موت نے بھی آزادی کشمیر کی تحریک کو نیا عزم، ولولہ دیا ہے۔ مقبوضہ اور آزاد کشمیر کی قیادت کشمیری عوام میں بیداری کی نئی لہر کو منزل تک پہنچانے کے لیے یکسو ہوجائے۔ سید علی گیلانی تعزیتی ریفرنس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے لیاقت بلوچ نے کہاکہ الیکشن کمیشن کو آئینی تحفظ کے ساتھ بااختیار بنانا اور آئینی ادارے کا تحفظ تمام جمہوری قوتوں کی قومی ذمے داری ہے۔ آزاد عدلیہ، آزاد الیکشن کمیشن اور منصفانہ انتخابات ہی قومی سلامتی، قومی وحدت کی ضمانت ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اپنے اسلوب سیاست سے سیاسی محاذ پر بدتہذیبی، الزام تراشیوں اور توڑ پھوڑ مائنڈ سیٹ کو فروغ دیا ہے۔ غرور، تکبر، اقتدار کے نشے نے وزرا کو ذہنی مریض بنادیا ہے۔ اِسی لیے اِن کے ہاتھوں کسی فرد اور کسی ادارے کی عزت محفوظ نہیں۔ وزیر اعظم الیکشن کمیشن سے لڑنے کے بجائے اپنے وزرا کا محاسبہ کریں۔ الیکٹرونک ووٹنگ مشین حکومتی ڈھونگ ہے۔ مہنگائی، بیروزگاری، پیٹرول کی قیمتوں اور یوٹیلیٹی بلز میں ہوشربا اضافے سے توجہ ہٹانے کے لیے انجینئرڈ ایشوز کھڑے کیے جاتے ہیں۔ جھوٹ کی یہ دکان اب نہیں چل سکتی۔لیاقت بلوچ نے جماعت اسلامی کے مرکزی رہنما، سابق ایم این اے حاجی جاوید اقبال چیمہ کے انتقال پر تعزیت اور غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم ذہین سیاسی رہنما اور قومی، صوبائی اسمبلی میں اُن کا کردار بہت فعال تھا۔ غریب عوام کے ہمدرد اور مہذب سیاست کے پیروکار تھے۔