میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے پرعزم ہیں،نیب

223

اسلام آباد: چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال کا کہنا ہے کہ نیب زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر عمل کرتے ہوئے بڑی مچھلیوں کو قانون کے کٹہرے میں لانے اور ان کے خلاف میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے پرعزم ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید اقبال نے کہا کہ  موجودہ انتظامیہ کی جانب سے کئے گئے فیصلوں پر عملدرآمد اور باقاعدہ مانیٹرنگ سے نیب کی ساکھ اور تشخص میں اضافہ ہوا ہے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب سارک ممالک کیلئے رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے، نیب کو سارک اینٹی کرپشن فورم کا چیئرمین منتخب کیا گیا، نیب بدعنوانی کے خلاف اقوام متحدہ کے کنونشن کے تحت پاکستان کا فوکل ادارہ ہے۔

دوسری جانب ڈی جی آپریشن نے بتایا کہ نیب کو اپنے قیام سے اب تک 4 لاکھ 96 ہزار 460 شکایات وصول ہوئی ہیں ان میں سے 4 لاکھ 87 ہزار 124 شکایات نمٹا دی گئی ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ  نیب نے 16 ہزار 93 شکایات کی جانچ پڑتال کی منظوری دی، 15 ہزار 378 شکایات کی تصدیق کا عمل مکمل کیا گیا،  نیب نے 10 ہزار 241 انکوائریوں کی منظوری دی جن میں سے 9 ہزار 275 انکوائریاں مکمل کی گئیں۔

ڈی جی آپریشن کا مزید کہنا تھا کہ  نیب نے 4 ہزار 654 انویسٹی گیشنز کی منظوری دی جس میں سے 4 ہزار 358 مکمل کی گئیں، نیب نے اس عرصہ کے دوران بالواسطہ اور بلاواسطہ طور پر 816.793 ارب روپے بالواسطہ اور بلاواسطہ طور پر وصول کرکے قومی خزانہ میں جمع کرائے ہیں جو کہ ریکارڈ کامیابی ہے۔