صاحبزادہ ابوالخیر زبیر ملی یکجہتی کونسل کے صدر لیاقت بلوچ سیکرٹری جنرل منتخب

109

لاہور(نمائندہ جسارت) ملی یکجہتی کونسل کے سربراہی اجلاس میں متفقہ طور پر آئندہ 3 برس کے لیے صاحبزادہ ابو الخیر محمد زبیر کو صدر اور لیاقت بلوچ کو سیکرٹری جنرل منتخب کر لیا گیا۔صاحبزادہ ابو الخیر محمدزبیر کی صدارت میں منعقد ہونے والے اعلیٰ سطحی اجلاس میں رکن جماعتوں کے قائدین نے ملکی اور بین الاقوامی حالات کے تناظر میں ایک متفقہ اعلامیہ بھی جاری کیا۔ اجلاس میں تمام رکن جماعتوں کے قائدین جن میںجماعت اسلامی کے امیر سراج الحق، سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین علامہ راجا ناصر عباس، تحریک منہاج القرآن(ناظم اعلیٰ) خرم نواز گنڈا پور، سربراہ ہدیۃ الہادی پاکستان پیر ہارون گیلانی، سیکرٹری جنرل اسلامی تحریک پاکستان علامہ عارف حسین واحدی،سربراہ اسلامی جمہوری محاذ مولانا حافظ زبیر احمد زہیر، کونسل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ، کونسل کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ثاقب اکبر،پیر عبد الرحیم نقشبندی، شجاع الدین شیخ،حافظ عبد الغفار روپڑی،سربراہ متحدہ جمعیت اہل حدیث سید ضیا اللہ شاہ بخاری،مولانا ابو عمار زاہد الراشدی، پیر غلام رسول اویسی، قاری یعقوب شیخ،عبد اللہ گل،مفتی گلزار احمد نعیمی، خواجہ معین الدین کوریجہ، صابر ابو مریم، مولانا عبد المالک، پیر صفدر گیلانی، سید ناصر شیرازی، حمید الحسن رضوی، ڈاکٹر محمد حسین، سید اسد عباس نقوی اور دیگر رہنمائوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اعلامیے میں کہا گیا کہ 5 اگست 2021ء کشمیر کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے۔ ا س روز بھارت کے فاشسٹ وزیراعظم نریندر مودی نے تمام عالمی معاہدوں، اقوامِ متحدہ کی قراردادوں کو پامال کرتے ہوئے بھارتی آئین میں یکطرفہ متنازع ترامیم کیں۔اعلامیے میںکہا گیا ہے کہ اقوامِ متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خودارادیت ہی مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل ہے۔اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ افغانستان میں برطانیہ، روس اور اب امریکا کی ناکامی سے عالمی برادری سبق سیکھے۔ دنیا میں فساد، جنگ و جدل اور جارحیت کے ڈاکٹرائین ناکام ہیں۔ ناجائز مقاصد کے حصول کے لیے دہشت گرد تنظیمیں پیدا کرنے سے دنیا میں فساد، عدم برداشت اور انتہا پسندی پھیل رہی ہے۔ضروری ہے کہ افغانستان میں تمام طبقوں اور خطوں کی قیادت کی ہم آہنگی کے ساتھ حکومت تشکیل پائے جو ہر لحاظ سے افغان عوام کی نمائندہ ہو۔ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ پوری ملت اسلامیہ ماہِ محرم الحرام میں احترام اور امن کو یقینی بنائے، کربلا کے شہدا خانوادہ رسولؐ نے اسلامی اصولوں کی حفاظت کے لیے عظیم قربانی دی۔ میدانِ کربلا میں حق اور باطل کا معرکہ، اہل ایمان کی مشترکہ طاقت ہے۔ حسینیت قرآن و سنت کا راستہ اور یزیدیت قرآن و سنت سے انحراف ہے۔ اعلامیے میں کہا گیا کہ یکم محرم الحرام کی مناسبت سے خلیفہ المسلمین حضرت عمر ؓ کا یوم شہادت بھی عقیدت و احترام سے منایا جائے۔ ملی یکجہتی کونسل ماہِ محرم الحرام میں امن، وحدت اور یکجہتی کو یقینی بنائے گی۔اعلامیے میں وقف املاک ایکٹ، گھریلو تشدد کے بارے میں قانون سازی، اسلامی قوانین کے خاتمے کے لیے یورپی قرارداد کی تردید، مسلم مسالک کے مابین ہم آہنگی اور یوم آزادی پر کانفرنسوں اور تقاریب کے انعقاد کے حوالے سے بھی نکات شامل ہیں۔یادر رہے کہ ملی یکجہتی کونسل کا سربراہی اجلاس مجلس وحدت مسلمین کی میزبانی میں جامع امام الصادق اسلام آباد میں منعقد ہوا۔اجلاس کے اختتام پر علامہ عارف حسین الحسینی کے یوم شہادت کی مناسبت سے فاتحہ خوانی کی گئی اور اتحاد امت کے لیے ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔