حکمرانوں نے لنگرخانوں کے سوا کچھ نہیں دیا‘ سینیٹر مشتاق احمد

128
سوات: امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخوا سینیٹر مشتاق احمد خان المرکز الاسلامی سنگوٹہ میں صوبائی شوریٰ کے دو روزہ اجلاس سے خطاب کررہے ہیں

سوات (صباح نیوز) جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کی صوبائی مجلس شوریٰ کا 2 روزہ اجلاس المرکز الاسلامی سنگوٹہ سوات میں ختم ہوگیا۔ اجلاس کی صدارت جماعت اسلامی کے صوبائی امیر سینیٹر مشتاق احمد خان نے کی، جس میں صوبائی سیکرٹری جنرل عبدالواسع، نائب امرا مولانا محمد اسماعیل، عنایت اللہ خان، مولانا تسلیم اقبال، نورالحق، ڈپٹی سیکرٹری جنرل مولانا حنیف اللہ،
شاہ حسین اور صہیب الدین کاکا خیل سمیت اراکین شوریٰ نے شرکت کی۔ اجلاس میں سالانہ کارکردگی کا جائزہ لیا گیا اور رپورٹس پیش کی گئیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے صوبائی امیر سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا کہ پی ٹی آئی کی وفاقی حکومت نے 3 سال میں بھی کوئی خاطر خواہ کارکردگی نہیں دکھائی۔ حکومت کے 3 برس میں مہنگائی،بے روزگاری، لوڈشیڈنگ ، پٹرول، ڈیزل اور ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوا۔ حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے عوام کو کسی قسم کا ریلیف نہیں ملا۔ حکومت نے عوام کو روزگار ، روٹی، کپڑا اور مکان دینے کے بجائے لنگر خانوں اور پناہ گاہوں میں ڈال دیا ہے۔ ملک کو آئی ایم ایف اور ایف اے ٹی ایف کا غلام بنا دیا ہے۔ ایف اے ٹی ایف کی خوشنودی کے لیے عجلت میں قوانین بنائے گئے لیکن پاکستان گرے لسٹ سے نہ نکل سکا۔ سامراجی آقاو¿ں کو خوش کرنے کے لیے وقف پراپرٹی بل، گھریلو تشدد بل اور میوچل لیگل اسسٹنس کریمنل میٹر جیسے بل قومی اسمبلی اور سینیٹ سے پاس کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جوشعائر اسلام، خاندان اور ملک کی تباہی کا باعث ہیں۔ ہم قومی اسمبلی اور سینیٹ میں بیرونی آقاو¿ں کے اشاروں پر لائے جانے والے بلوں کے خلاف مزاحمت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں ریفرنڈم کرانے کا وزیراعظم کا بیان پاکستان کی کشمیر کی پالیسی سے انحراف اور دستور کی دفعہ 257کی غلط تعبیر اور تشریح ہے۔ ہم اس بیان کی مذمت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو حقوق دلانے کے لیے 06 تا 14اگست جے آئی یوتھ کے زیر اہتمام چترال سے وزیرستان تا پشاور کاروانِ انقلاب چلائیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی بلدیاتی انتخابات میں بھرپور انداز میں حصہ لے گی۔کارکنان تیاریاں شروع کردیں اور گھر گھر جا کر جماعت کا پیغام، نشان اور دعوت پہنچائیں۔