طالبان کو فضائی سپورٹ دینے کا الزام؛ پاکستان کا ردعمل سامنے آگیا

182

اسلام آباد: طالبان کو فضائی سپورٹ دینے کے الزام پر پاکستان کا ردعمل سامنے آگیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ نے افغانستان کے نائب صدر امر اللہ صالح کی جانب سے لگایا گیا الزام مسترد کردیا۔ ترجمان نے کہا کہ افغان حکومت نے سپین بولدک میں طالبان کے خلاف فضائی کارروائی سے آگاہ کیا تاہم پاک فضائیہ نے اس حوالے سے افغان ایئرفورس کے ساتھ کوئی بات چیت نہیں کی۔

زاہد حفیظ کا کہنا ہے کہ پاکستان نے حال ہی میں 40 افغان سیکیورٹی اہلکاروں کو افغانستان کے حوالے کیا، سیکیورٹی اہلکار فرار ہو کر پاکستان آگئے تھے، پاکستان نے اپنے علاقے میں سیکیورٹی فورسز اور آبادی کے تحفظ کے لیے اقدامات اٹھائے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ افغان حکومت کے اپنی سرزمین پر کارروائی کے حق کو تسلیم کرتے ہیں، پاکستان افغانستان میں قیام امن کے لیے پُرعزم ہے، افغان امن کے لیے اس اہم موقع پر تمام توجہ سیاسی تصفیہ پر مرکوز ہونی چاہیے، ایسے بیانات پاکستان کی افغان امن کے لیے مخلصانہ کوششوں پر منفی اثر ڈالتے ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز افغانستان کے نائب صدر امر اللہ صالح نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا تھا کہ پاکستانی فضائیہ نے افغان فوج اور افغان فضائیہ کو سرکاری طور پر متنبہ کیا ہے کہ اگر طالبان کو افغان علاقے سپین بولدک سے بے دخل کرنے کی کوشش کی گئی تو اس کوششوں کا جواب پاکستانی فضائیہ دے گی۔