وفاقی کابینہ ،تحریک لبیک پر پابندی برقرار،فوج کیلئے 15 فیصد خصوصی الائونس کی منظوری

144
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان وفاقی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

اسلام آباد ( نمائندہ جسارت) وفاقی کابینہ نے تحریک لبیک پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ، پاک فوج کے لیے 15فیصد خصوصی الائونس کی منظوری دے دی۔ وفاقی کابینہ میں ٹی ایل پی پر پابندی سے متعلق جائزہ کمیٹی کی رپورٹ پیش کی گئی۔ کابینہ نے ٹی ایل پی پر پابندی سے متعلق جائزہ کمیٹی کی رپورٹ کی منظوری دے دی۔ وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے وفاقی کابینہ کے فیصلوں پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نے تحریک لبیک پاکستان پر پابندی کا فیصلہ برقرار رہے گا، تحریک لبیک پاکستان پر پولیس کو مارنے کا الزام ہے، ٹی ایل پی نے املاک کو نقصان پہنچایا۔انہوں نے کہا ہے کہ وفاقی کابینہ نے ٹی ایل پی پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ اے ٹی سی ایکٹ کے تحت کیا گیا ہے، ٹی ایل پر پابندی کے سلسلے میں اب الیکشن کمیشن سے رابطہ کیا جائے گا،دوسرے مرحلے میں الیکشن کمیشن سے تنظیم کا انتخابی نشان ختم کرایا جائیگا۔ فواد چودھری نے کہا کہ کابینہ نے عیدالاضحٰی پر تین دنوں کی چھٹیوں کی منظوری دی ہے، این سی او سی نے 5 دن چھٹیوں کا کہا تھا، حکومت نے عید پر 20 سے 22 جولائی تک چھٹی کی منظوری دی ہے۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ کراچی اور خیبرپختونخوا میں کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں، مسلح افواج کے اہلکاروں کے لیے 15 فیصد خصوصی الاؤنس کی منظوری دی گئی ہے، مسلح افواج کی تنخواہوں میں 2 سال سے کوئی اضافہ نہیں ہوا تھا۔فواد چودھری نے کہا کہ حلیم عادل شیخ کی درخواست پر کابینہ نے جے آئی ٹی کی منظوری دی، سندھ حکومت نے حلیم عادل شیخ کے خلاف کیسز بنائے تھے۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ حزب اختلاف کے ساتھ الیکٹورل ریفارمز پر بات چیت ہورہی ہے، بہت سی باتوں پر اتفاق ہے ، چاہتے ہیں باقی چیزوں پر بھی اتفاق ہوجائے۔ فواد چودھری نے بتایا کہ سابق وزیرائے اعلیٰ ، ججز اور دیگر لوگوں نے بے شمار لوگ سیکورٹی کے لیے اپنے پاس رکھے ہوئے ہیں، کابینہ سمیت تمام لوگوں سے اضافی سیکورٹی واپس لی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی پوری کوشش ہے کہ افغانستان میں امن آئے، ہماری سوچ عالمی تعاون کی ہے، اسی طرح ہم آگے بڑھ سکیں گے۔ فوادچودھری نے کہا کہ پاکستان، ازبکستان میں ریڈیو، ٹی وی کے درمیان تعاون کی منظوری دی گئی ہے، پاکستان کی افغان مہاجرین کی صورتحال پر نظر ہے، دنیا کو چاہیے وہ پاکستان کے ساتھ کھڑی ہو۔ وزیر اطلاعات نے کہا کہ افغانستان میں خراب حالات پر پاکستان کو سخت تشویش ہے، دعا گو ہیں افغانیوں کو اپنا گھر نہ چھوڑنا پڑے۔