مکئی کے دانوں میں ایسا صحت بخش کیا ہے؟

299

سردی، گرمی یا بارش کے موسم میں گرما گرم مکئی کے دانے جتنے مزیدار لگتے ہیں ان کے طبی فوائد بھی اتنے ہی زیادہ ہیں۔

ماہرین کی جانب سے پیلے، ذائقے سے بھرپور چھوٹے چھوٹے دانوں پر مشتمل بھٹے یا مکئی کے دانوں میں موجود غذائیت انتہائی صحت بخش قرار دی گئی ہے، اس میں موجود وٹامن بی1 اور  بی 5 توانائی فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ پٹھوں کے نئے خلیات بنانے میں بھی اہم کردار ادا کرتے ہیں، مکئی کے استعمال سے صحت پر متعدد طبی فوائد حاصل ہوتے ہیں جنہیں نظر انداز کرنا بیوقوفی ہوگا۔

غذائی ماہرین کے مطابق چھلی، بھٹہ یا مکئی میں وٹامن سی پایا جاتا ہے جو کہ بے شمار امراض سے لڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور قوتِ مدافعت کو مضبوط بناتا ہے، اس میں موجود فائبر جسم کی توانائی بحال کرتا، کولیسٹرول لیول کی سطح متوازن بناتا اور نظامِ ہاضمہ کی کارکردگی درست رکھتا ہے جس کے نتیجے میں قبض کی شکایت سے نجات ممکن ہوتی ہے۔

مکئی کے استعمال سے کمزور بینائی کا علاج بھی ممکن ہے، مکئی میں موجودکیروٹینائڈناصرف بینائی تیز کرتا ہے بلکہ وٹامن اے کے حصول کا بھی ایک بہترین ذریعہ ہے۔

حالیہ امریکی تحقیق کے مطابق پاپ کارن صحت کے لیے نہایت فائدہ مند ہیں جن کا استعمال پھل اور سبزیوں کی طرح ہی مفید ہوتا ہے، تحقیق کے مطابق پاپ کارن میں بھی پھلوں میں پائے جانے والی صحت کے لیے مطلوب غذائیت موجود ہوتی ہے لہٰذا وہ افراد جو پھل اور سبزیاں کھانا پسند نہیں کرتے وہ پاپ کارن کھا سکتے ہیں۔

 ڈائٹنگ کرنے والے افراد کے لیے بھی پاپ کارن ایک بہترین آپشن ہے کیونکہ یہ فائبر اور منرلز سے بھرپور بہترین غذا ہے جس کے استعمال سے تادیر بھوک محسوس نہیں ہوتی۔

غذائی ماہرین کے مطابق مکئی کے 1 کپ میں 177 کیلوریز، 41 گرام فائبر، 5.4 گرام نمکیات ، 2.1 گرام چکنائی، 4.6 گرام ریشہ، روزانہ کی ضرورت کا 17 فیصد وٹامن سی، 24 فیصد تھیامین (وٹامن بی 1)، 19 فیصد فولیٹ (وٹامن بی9)، 11 فیصد میگنیشیئم اور 10 فیصد پوٹاشیئم پایا جاتا ہے۔

مکئی کے استعمال سے صحت کو ملنے والے فوائد: غذائی ماہرین کے مطابق جو لوگ مکئی کا استعمال کرتے ہیں ان میں بلڈ شوگر، انسولین کی مقدار مناسب حد تک کنٹرول میں رہتی ہے۔

تحقیق کے مطابق مکئی اینٹی آکسیڈینٹ کا بہترین ذریعہ ہے، اس میں فینولک ایسڈ نامی کمپاؤنڈ پایا جاتاہے جس کی وجہ سے جسم میں اینٹی آکسیڈنٹس کی تعداد بڑھتی ہے جس کے نتیجے میں جسم سے مضرِ صحت مادوں کا صفایا ہوتا ہے۔

مکئی  میں ایسے اجزاء پائے جاتے ہیں جو نظامِ انہضام کے لیے انتہائی مفید ہیں، اسے کھانے سے قبض دور ہونے کے ساتھ پیٹ ٹھیک رہتا ہے۔

اگر آپ چاہتے ہیں کہ وزن کنٹرول میں رہے تو چاول کھانے کی بجائے مکئی کو ترجیح دیں، اس سے ملنے والی پروٹین کی وجہ سے کچھ ہی عرصے میں آپ کا وزن کم ہونے لگے گا۔

وٹامن کی کمی سے ہونے والی خون کی کمی کو مکئی کھا کر با آسانی دور کیا جاسکتا ہے، اس میں آئرن کی وافر مقدار پائی جاتی ہے جو کہ جسم کو مضبوط بنانے میں مدد دیتی ہے۔

مکئی کا استعمال: مکئی کو کارن سوپ، سلاد، سالن اور دیگر غذاؤں میں پکا کر استعمال کیا جا سکتا ہے جبکہ مکئی کو گرمیوں میں براہِ راست بھون کر بھی بطور اسنیک استعمال کیا جا سکتا ہے۔