بنگلہ دیش : فیکٹری میں آتشزدگی ، 52 افراد جاں بحق

142
ڈھاکا: فیکٹری کی عمارت میں لگی آگ پر قابو پانے کی کوشش کی جارہی ہے‘ رضاکار مرنے والوں کی باقیات منتقل کررہے ہیں

ڈھاکا (انٹرنیشنل ڈیسک) بنگلادیش کے دارالحکومت ڈھاکا میں مشروبات اور کھانے کی اشیا تیار کرنے والی ایک فیکٹری میں آتشزدگی کے باعث 52 افراد جاں بحق ہوگئے۔ خبررساں اداروں کے مطابق یہ واقعہ ڈھاکا کے صنعتی علاقے روپ گنج میں واقع 6منزلہ عمارت میں پیش آیا۔ پولیس کے مطابق اس حادثے میں تقریباً 30 افراد زخمی ہوئے، جو جان بچانے کے لیے عمارت کی بالائی منزلوں کی کھڑکیوں سے باہر کودنے پر مجبور ہوگئے تھے۔ امدادی عملے کے مطابق عمارت کی چھٹی منزل پر پلاسٹک اور آتش گیر کیمیکلز کی وجہ سے آگ بھڑک گئی تھی۔ اس سے قبل مقامی پولیس سربراہ نے ابتدائی طور پر صرف 3 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی تھی۔ یہ واقعہ جمعرات کی شام پیش آیا، تاہم جمعہ کی صبح تک اس فیکٹری سے آگ کے شعلے بھڑکتے دکھائی دیے۔ اس دوران فیکٹری میں کام کرنے والے کارکنوں کے رشتے داروں اور فیکٹری کے دیگر ملازمین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ کچھ دیگر کارکن فیکٹری کی عمارت میں ابھی تک پھنسے ہوئے ہیں اور یہ جان بچا کر نکلنے میں کامیاب نہیں ہو سکے۔ پولیس کے مطابق فیکٹری کے درجنوں کارکن لاپتا ہیں۔ پولیس کا کہنا تھا کہ وہ اس بارے میں یقین کے ساتھ نہیں کہہ سکتے کہ کتنے افراد عمارت میں پھنسے ہوئے ہیں۔ فائر فائٹرز نے فیکٹری کی عمارت کی چھت سے، جہاں نوڈلز اور مشروبات تیار کی جاتی تھیں، 25 افراد کو بچایا۔ ہاشم فوڈ اینڈ بیوریجز فیکٹری میں آگ لگنے کے حادثے میں بچ کر فرار ہونے میں کامیاب ہونے والے ایک ورکر محمد سیفل نے بتایا کہ جب آگ کے شعلے بھڑکنا شروع ہوئے تو فیکٹری کے اندر درجنوں کار کن موجود تھے۔