لکھنؤ: دلہن پہلی رات دلہا کو طمانچہ مار کرگھر واپس آگئی

434

لکھنؤ: بھارتی ریاست اترپردیش سے تعلق رکھنے والی دلہن نے رخصتی کی پہلی ہی سسرال پہنچتے ہی شوہر کو تھپڑ مارا اور پھر اپنے گھر واپس آگئی۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق  دلہن کا دولہے کو تھپڑ مارنے کا فلمی واقعہ جونپور کے لواین گاؤں میں پیش آیا جہاں دلہن نے سسرال پہنچ کر گاڑی سے اترتے ہی دولہا کو تھپڑ مارا اور پھر اپنا عروسی لباس تبدیل کرکے واپس میکے چلی گئی۔

پورٹ کے مطابق سسرال والوں سے جب یہ معاملہ حل نہ ہوسکا تو پولیس کو اطلاع دی گئی لیکن پولیس بھی اس معاملے کو سلجھا نہ سکی جبکہ عجیب و غریب واقع جو پیش آیا ہے جس کا سن کر لوگ حیران ہو پریشان ہو گئے تھے۔

پولیس کے مطابق  ابتدائی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہےکہ دلہن کو شادی کے روز ہی دولہا کے کسی اور لڑکی کے ساتھ معاشقے کا علم ہوا جس پر اس نے اس طرح کےردعمل کا اظہار کیا۔

میڈیا کے مطابق  شادی کی تمام رسومات کے دوران دلہن خاموش رہی جیسے ہی وہ اپنے سسرال پہنچی تو یہ واقعہ پیش آیا جبکہ دلہا کے اہل خانہ دلہن کے گھر پہنچ گئے اور سمدھیوں سے معاملات کو حل کرنے کی درخواست کرتے رہے، تاہم دلہن نے ساتھ جانے سے صاف انکار کردیا جس کے بعد دلہا والے تھانے پہنچ گئے۔

واضح رہے دلہن نے بتایاہےکہ دلہا کسی اور لڑکی کو پسند کرتا ہے اور تاحال یہ افیئر جاری ہے اس لیے وہ کسی ایسے لڑکے کے ساتھ زندگی نہیں گزار سکتی جو شادی کسی اور سے کرے اور پسند کسی اور کو کرتا ہو۔

دوسری جانب اتر پردیش میں ایک اور حیرت انگیز واقعہ پیش آیا جہاں ایک دلہن نے شادی کی تقریب میں دلہا کو ہندی اخبار پڑھنے کے لیے کہا جس کے نہ پڑھ پانے پر دلہن نے شادی سے انکار کردیا۔

دلہن کے والد کا کہنا تھا کہ رشتہ طے ہونے سے قبل انہوں نے لڑکے کو چشمہ لگائے دیکھا تھا اور انہیں خیال گزرا کہ شاید وہ اسٹائل کے لیے چشمہ پہنے ہوئے ہو لیکن جب وہ شادی کی تقریب میں بھی عینک پہن آیا تو ہمیں شک ہوا جبکہ دلہن کے گھر والوں کی جانب سے دلہا اور اس کے گھر والوں کے خلاف دھوکا دہی کا مقدمہ بھی درج کروا دیا گیا ہے۔