ریاستی نظام تتر بترہوگیا ، عوام انصاف سے محروم ہیں ‘ لیاقت بلوچ

58

لاہور(نمائندہ جسارت)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ حکومت ، اپوزیشن اور ریاستی ادارے ایک دوسرے کو بلیک میل اور انجینئرڈ ہنگامہ آرائی کے محاذ پر ڈٹے ہوئے ہیں ۔عملاً پورا ریاستی نظام تتر بتر ہوگیاہے ۔ تعلیم ، صحت ، روزگار ۱ معاشرتی انسانی اقدار ، شخصی اور اداروں کی لاقانونیت ، ٹوٹی سڑکیں ، ابلتے گٹر ، گندا پانی ، عوام کے لیے حق اور انصاف سے محرومی بڑا روگ بن گیاہے ۔ قومی قیادت ایڈہاک ازم ،5 سالہ دور انتشار اور اقتدار کے گل چھرے اڑانے کی حکمت عملی چھوڑے اور قومی ترجیحات پر پوری قوم کو متحد کرے ۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے لاہور میں بلدیاتی نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ حکومتی اور اپوزیشن اتحاد ناکام ہیں ۔ عوام اتحادوں کے خواہش مند ہیں لیکن اتحادوں کے پارٹنر ہمیشہ چھوٹے چھوٹے مفادات پر اتحادوں کا قتل عام کرتے ہیں ۔ منبر و محراب ، دینی جماعتیں عوام کی اسلام سے والہانہ عقیدت بڑی طاقت ہے ۔لیکن بدقسمتی سے دینی جماعتیں اپنے اپنے مسالک میں بھی ٹوٹ پھوٹ گئی ہیں ۔ اسی وجہ سے دینی اتحاد اپنا رنگ نہیں جما سکا ۔ جماعت اسلامی نے تنہا پروز نہیں ، مزدوروں ، طلبہ ، کسانوں ، نوجوانوں اور خواتین کے ساتھ مل کر پرعزم طویل المیعاد جدوجہد کا آغاز کردیاہے ۔ اسلام کی حکمرانی لائیں گے اور عوام کی گردنوں پر ظلم ،جبر ،معاشی ناانصافی کے مسلط نظام کا خاتمہ کریں گے ۔ انتخابی نشان ’’ترازو ‘‘پر ملک بھر میں بااعتماد ووٹ بینک اکٹھا کریں گے ۔ لیاقت بلوچ نے فیصل آباد میں عوامی اجتماعات سے خطاب اور چنیوٹ میں چودھری مسعود اقبال کی اہلیہ کے جنازے میں بھی شرکت کی۔