ویزا نہ ملنے کے سبب ہندو اپنی استھیاں کہاں بہاتے ہیں؟

180

کراچی: بھارت سے کشیدہ تعلقات کے باعث پاکستان میں آباد ہندو برادری مشکلات کا شکار ہے جبکہ کئی لوگ اپنے پیاروں کی راکھ دریائے گنگا میں بہانے کے منتظر ہیں مگر ویزا نہیں مل پارہا جس کے باعث شہر قائد کراچی کے شمشان گھاٹ میں سیکڑوں مُردوں کی راکھ جمع ہو گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کا قدیم میوہ شاہ قبرستان جس کے اطراف مختلف مذاہب کے قبرستانوں کے علاوہ ہندو برادری کا تاریخی شمشان گھاٹ بھی موجود ہے اور مندر سے متصل شمشان گھاٹ میں 200 کے قریب استھیاں موجود ہیں۔

ہندو برادری کے مطابق سالہا سال پہلے سے یہاں رکھی ان استھیوں کی وجہ یہ ہے کہ مرنے والوں کی خواہش تھی کہ ان کی راکھ بھارت کے دریائے گنگا میں بہائی جائیں۔

شری رام ناتھ مہاراج کہتے ہیں کہ یہ تمام استھیاں ان کے پاس ورثاء کی امانت ہیں تاہم ویزا نہ ملنے کے باعث وہ انہیں لے کر بھارت نہیں جا سکے جبکہ کراچی کی ہندو برادری کا کہنا ہے کہ ویزا نہ ملنے کے سبب وہ اپنی استھیاں نیٹی جیٹی، کوٹری یا سکھر میں بہاتے ہیں۔

ہندو برادری کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں اقلیتوں کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہیں لیکن دوطرفہ تعلقات بہتر ہو جائیں تو مذہبی رسومات کی ادائیگی اور مذہبی مقامات کی زیارت کے لیے بھارت جانا آسان ہو جائے گا۔