کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا ایک اور واقعہ

205

اونٹاریو: اسلامک انسٹیٹیوٹ آف ٹورنٹومیں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کرنے والے مشتبہ  مرد اورخاتون کو گرفتارکرلیا گیا جبکہ اس واقعے کے بعد سیکیورٹی مزید سخت کردی گئی ہے اور پولیس کا کہنا ہے کہ امکان ہے کہ دونوں افراد نشے میں دھت تھے۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق کینیڈا کی ریاست اونٹاریو کے شہرٹورنٹوکے اسکاربوروایریا میں واقع مسجد میں دو مشتنہ  مرداورخاتون نے زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی جبکہ دونوں نے مسجد کی انتظامیہ کوخطرناک نتائج کی بھی دھمکیاں دیں ہیں۔

پولیس نے فوری طورپردونوں مرد وخواتین کوگرفتارکرلیا ہے، تاہم پولیس نے ملزمان اوران کے ارادے سے متعلق مزید تفصیلات جاری نہیں کیں جبکہ مرد کی عمر 24 سالہ اور خاتون کی عمر 22 سال بتائی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ اونٹاریو میں رواں ماہ 8 جون کو20 سالہ نوجوان نے چہل قدمی کرتے مسلم خاندان کو جان بوجھ کر کچل دیا تھا جس کے نتیجے میں 74 اور 44 سالہ خواتین، 46 سالہ مرد اور 15 سالہ لڑکی شہید ہوگئے تھے جبکہ واحد زندہ بچ جانے والا شدید زخمی 9 سالہ لڑکا اسپتال میں زیرعلاج ہے۔

یاد رہے کینیڈین ہائی کمشنر وینڈی گلمور نے کینیڈا میں پاکستانی خاندان کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ کینیڈا میں کسی بھی صورت میں اسلاموفوبیا قابلِ قبول نہیں ہے۔