سرکاری اسپتالوں میں سہولیات کی عدم دسیابی حکومتی ناکامی ہے،زکر اللہ مجاہد

60
لاہور: ثریا عظیم اسپتال کی گورننگ باڈی کے صدر میاں ذکر اللہ مجاہد مینجمنٹ کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کررہے ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت) صدر گورننگ باڈی ثریاعظیم اسپتال و امیر جماعت اسلامی لاہور میاں ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ حکومت کی ذمے داری ہے کہ بجٹ میں اسپتالوں کے بجٹ میں اضافہ کرے تاکہ عوام کو علاج معالجے کی بہترین سہولیات میسر آ سکیں۔ صوبائی دارالحکومت کے سرکاری اسپتالوں کی حالت زار کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ ایمرجنسی میں مریضوں کا علاج وہیل چیئرز، زمین پر لٹا کر یا ایک بیڈ پر 3 مریض لٹا کر کیا جارہا ہے۔ شہر کے کئی بڑے اسپتالوں میں تھیلیسیمیا، انجیو گرافی کی سہولیات بھی موجود نہیں۔ جنرل اور سروسز اسپتال میں ایسی صورتحال کے بعد غریب مریض سسک سسک کر جان کی بازی ہار نے پر مجبور ہیں، جو محکمہ صحت اور حکمرانوں کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ثریاعظیم وقف اسپتال کی مینجمنٹ کمیٹی کے اجلاس میں عہدیداران اسپتال سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سیکرٹری گورننگ باڈی ڈاکٹر افتخار چودھری، ایم ایس ثریا عظیم اسپتال ڈاکٹر لیاقت علی، رکن گورننگ باڈی ثریا عظیم اسپتال لاہورعبدالعزیز عابد، پرنسپل ثریا عظیم انسٹیٹیوٹ آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزفیاض احمد فیضی، فنانس ہیڈ محسن بشیر، ایڈمن شہزاد حسین نے شرکت کی۔ میاں ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ حکومت صحت کے بجٹ کو بڑھانے کے ساتھ لوکل فارماسوٹیکل انڈسٹری کو سہولیات فراہم کرے تاکہ عوام کو سستی ادویات مہیا ہوسکیں اور پاکستان کی انڈسٹری خوشحال ہو۔ انہوں نے کہا کہ ثریا عظیم وقف اسپتال سو فیصد چیریٹی کا ادارہ ہے۔ جس میں 42 کنسلٹنٹ، ڈاکٹرز دن رات مریضوں کو علاج کی بہترین سہولیات فراہم کررہے ہیں۔