بابر خانزادہ قتل کیس میں نامزد ملزمان کی برعیت عدالت میں چیلنج

89

ٹنڈوالہٰیار (نمائندہ جسارت) ایس ایس پی ٹنڈوالہٰیار کی جانب سے بابر خانزادہ قتل کیس میں نامزد ملزمان کو پولیس کارروائی کے بعد رہا کر نے کے اقدام کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کر نے کا فیصلہ، چیف جسٹس آف پاکستان سے بابر خانزادہ قتل کیس کی حساس اداروں سے تحقیقات کرانے اور از خود نوٹس لینے کا مطالبہ، ایس ایس پی ٹنڈوالہیٰار کو فوری طور پر ہٹایا جائے۔ ایس ایس پی ٹنڈوالہیٰار اپنے پیٹی بھائیوں کو بچانے کے لیے محکمے کی جانب سے 169 کی رپورٹ پیش کر کے ملزمان کو جیل سے رہاکرانے کی مذمت کر تے ہیں اور 169کی کارروائی سمیت میڈیکل رپورٹ کو مسترد کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار خانزادہ راجپورت ویلفیئر کے چیئرمین راشد خانزادہ نے نیشنل پریس کلب ٹنڈوالہٰیار کی رپورٹنگ ٹیم سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بابر خانزادہ پر داخل ہو نے والے کیس کو ڈی آئی جی حیدر آباد جعلی قرار دے چکے ہیں اور آئی جی سندھ گورنر سندھ کی جانب سے مذکورہ قتل کا نوٹس لینے کے بعد انکوائری کرنے والے پولیس افسران ایس ایس پی ٹنڈوالہیٰار کے ہوتے ہوئے شفاف انکوائری نہں کرسکتے۔ چیف جسٹس پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ واقعے کی جے آئی ٹی اور اعلیٰ تحقیقاتی کمیشن بنایا جائے، انسانی حقوق کے تحت انٹرنیشنل تحقیقاتی ٹیم بھی بنائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس ڈاکٹروں کے ساتھ ملکر بے گناہ نوجوان کے خون کو ضائع کرنے کی جو کوشش کررہی ہے۔ اس کی مذمت کرتے ہیں اور بے گناہ نوجوان کے ورثاء کو انصاف دلانے کے لیے ہر سطح تک جانے کو تیار ہیں، قتل میں ملوث افراد کو سزاد لانے کے لیے ہر عدالت کے دروازے پر دستک دیں گے۔