فلسطینی شہری مسجد اقصیٰ میں اعتکاف کا سلسلہ جاری رکھیں، امام مسجد اقصیٰ

174

مقبوضہ بیت المقدس: مسجد اقصیٰ کے امام الشیخ عکرمہ صبری نے فلسطینیوں پر زور دیا ہےکہ فلسطینی شہری مسجد اقصیٰ میں اعتکاف کا سلسلہ جاری رکھیں جبکہ دھاووں کو ناکام بنانے کے لیے قبلہ اول کی طرف رخت سفر باندھیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق الشیخ عکرمہ صبری نے بیان میں خبردار کیا کہ یہودی انتہا پسندوں کے لیے مسجد اقصیٰ کو کھولنے اور 28 رمضان المبارک کو یہودیوں کے دھاووں کے لیے قبلہ اول میں انتظامات کرنے کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے۔

انہوں نے کہا کہ یہودی انتہا پسند ‘متحدہ القدس’کے دن کی آڑ میں مسجد اقصیٰ میں گھس کر تلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات ادا کرنے کا اعلان کرچکے ہیں جو کہ مسلمانوں کے مقدس مقام مذہبی اشتعال انگیزی کا مظاہرہ کرنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ مسجد اقصیٰ اور القدس میں کسی قسم کی مذہبی غنڈہ گردی کے تمام ترنتائج کا ذمہ دار اسرائیل ہوگا۔

امام مسجد اقصیٰ نے کہا کہ 28 رمضان المبارک کو یہودی آباد کاروں کے دھاووں کو روکنے کے لیے تمام ضروری اقدامات کیے جا رہے ہیں جبکہ اس روز مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کی زیادہ سے زیادہ تعداد کو یقینی بنانے اور قبلہ اول کے دفاع کے لیے فلسطینیوں کو قبلہ اول میں موجود رہنے کے احکامات دیئے گئے ہیں۔

انہوں نے فلسطینی شہریوں پر زور دیا کہ وہ مسجد اقصیٰ میں یہودی غنڈہ گردی روکنے اور دھاووں کو ناکام بنانے کے لیے قبلہ اول کی طرف رخت سفر باندھیں اور قبلہ اول میں زیادہ سے زیادہ وقت گزاریں۔

امام مسجد اقصیٰ الشیخ عکرمہ صبری کا کہناتھا کہ اس سلسلے میں فلسطینیوں سے اپیل کی گئی کہ وہ ماہ صیام کے باقی ایام بالخصوص لیل القدر کے بعد مکمل اعتکاف کریں۔