لیاقت آباد میں تجاوزات ہٹانے کی درخواست، اسسٹنٹ رجسٹرار طلب

20

کراچی(اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ نے لیاقت آباد میں تجاوزات ہٹانے سے متعلق درخواست پر کورٹ اسسٹنٹ رجسٹرار کو طلب کر لیا۔منگل کو سندھ ہائی کورٹ نے لیاقت آباد میں تجاوزات ہٹانے کے متعلق درخواستوں کی سماعت کی ۔سماعت کے موقع پر عدالت نے وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے باوجود ڈائریکٹرسندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی لیاقت آباد محمد رقیب کو گرفتار کرکے پیش نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا ۔اس موقع پر متعلقہ تھانے کے نمائندے نے پیش ہوکر عدالت کو بتایا کہ ڈائریکٹرسندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی لیاقت آباد محمد رقیب کے وارنٹ گرفتاری کل ہی موصول ہوئے ہیں اس لیے تعمیل کرنے میں تاخیر ہوئی ہے۔سماعت کے دوران سرکاری وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ عدالتی عملے نے وارنٹ کا اجرا ہی تاخیر سے کیا ہے۔ دوران سماعت درخواست گزار کے وکلا نے عدالت کو بتایا کہ عدالتی حکم پر عمل درآمد کی ذمے داری ڈائریکٹر لیاقت آباد پر عائد ہوتی ہے اور ڈائریکٹر لیاقت آباد کسی کی بات نہیں سن رہے ہیں جبکہ لیاقت آباد میں تجاوزات ہٹانے کے لیے کسی بھی قسم کی کارروائی نہیں کی جا رہی ہے، بعد ازاں عدالت نے کورٹ اسسٹنٹ رجسٹرار کوطلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔واضح رہے کہ عدالت نے گزشتہ سماعت پرڈائریکٹر ایس بی سی اے لیاقت آباد محمد رقیب کی مسلسل عدم حاضری پر وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔