سعودی ولی عہد کی امریکا کے خصوصی ایلچی سے ملاقات

155
ریاض: سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے امریکی ایلچی ٹم لینڈ رکنگ ملاقات کررہے ہیں

ریاض/ تہران (انٹرنیشنل ڈیسک) سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان السعود نے یمن کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی ٹم لینڈرکنگ سے ملاقات کی۔ خبررساں اداروں کے مطابق ملاقات کے دوران یمن کی تازہ ترین صورت حال زیر بحث آئی۔ یمنی بحران کے ایک جامع سیاسی حل تک پہنچنے کے لیے کی جانے والی مشترکہ کوششوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔ ملاقات میں سعودی نائب وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان، امریکا میں سعودی عرب کی سفیر شہزادہ ریما بن بندر بن سلطان، وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور یمن میں سعودی عرب کے سفیر محمد بن سعود الجابر بھی موجود تھے۔ ان کے علاوہ ریاض میں امریکی سفارت خانے کی ناظم الامور مارٹینا اسٹرونگ اور سعودی عرب میں امریکا کے سفیر کرسٹوفر ہنرل بھی ملاقات میں شریک ہوئے۔ دوسری جانب ایران نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے مفاہمت کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ دونوں ممالک کے سیاسی اختلافات جلد دور ہو جائیں گے۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق محمد بن سلمان نے حالیہ انٹرویو میں ایران کے ساتھ اچھے تعلقات کی خواہش کا اظہار کیا تھا، جس پر ایران نے مفاہمت کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ مصالحت سے ہی خطے میں امن کا قیام ممکن ہے۔ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے ایران اور سعودی عرب اسلامی دنیا کے دو اہم ممالک ہیں، جو ایک دوسرے کے ساتھ مل کر خطے میں امن اور استحکام کے لیے ملک کام کر سکتے ہیں۔ترجمان سعید خطیب زادہ کا مزید کہنا تھا کہ دونوں ممالک تعمیری خیالات اور مثبت مذاکرات پر مبنی طریقہ کار سے بات چیت اور معاونت کے نئے دور میں داخل ہو سکتے ہیں، جس سے خطے میں ترقی اور بھائی چارے کی راہ ہموار ہوگئی۔سعودی عرب اور ایران کے درمیان تلخی میں اضافہ 2016ء میں ایک شیعہ عالم کو سزائے موت دینے پر ہوا تھا۔