این اے 249: پہلا ووٹ کاسٹ، ماسک اور شناختی کارڈ لازمی قرار

139

کراچی: شہر قائد  کے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 249 میں آج ہونے والے ضمنی انتخاب کے سلسلے میں ضیاء کالونی کے پولنگ اسٹیشن نمبر 256 میں پہلا ووٹ کاسٹ کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق این اے 249 کے ضمنی انتخاب کے سلسلے میں پورے حلقے میں صبح سے ہی گہما گہمی نظر آ رہی ہے، مختلف پولنگ اسٹیشنوں کے باہر ووٹرز کی قطاریں لگ گئیں جبکہ کورونا ایس او پیز کے تحت ماسک لازمی قرار دیا گیا ہے ،   ماسک  کے ساتھ شناختی کارڈ نہ ہونے پر بعض ووٹرز کو واپس بھی بھیج دیا گیا۔

مذکورہ حلقے میں پولنگ کا عمل آج صبح 8 بجے شروع ہوا ہے جو شام 5 بجے تک جاری رہے گا اور حلقے کے تمام پولنگ اسٹیشنز کے باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں جبکہ مختلف پولنگ اسٹیشنز پر تیاریاں نامکمل ہونے کی صورت میں وہاں پولنگ شروع نہیں ہوسکی ہے۔

الیکشن کمیشنر کراچی  کے مطابق پولنگ اسٹیشن نمبر 249، 247، 246، 241  میں بیلٹ باکس سیل نہیں کیے جا سکے، جس کی وجہ سے  ان پولنگ اسٹیشنز پر پولنگ کا عمل شروع نہیں ہوسکا جبکہ بیلٹ باکس سیل  نہ ہونے کی وجہ سیاسی جماعتوں کے پولنگ ایجنٹس کا وقت پر نہ پہنچنا ہے۔

خیال رہے این اے 249 میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 3 لاکھ 39 ہزار سے زائد ہے، جن میں مرد ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 1 ہزار 656 ہے جبکہ خواتین ووٹرز کی تعداد 1 لاکھ 37 ہزار 935 ہے۔

مسلم لیگ ن کے مفتاح اسمٰعیل، تحریکِ انصاف کے امجد آفریدی، پاک سر زمین پارٹی کے مصطفیٰ کمال، ایم کیو ایم کے حافظ مرسلین، پیپلز پارٹی کے قادر خان مندوخیل مقابلے میں شامل ہیں جبکہ حلقے میں 18 آزاد امیدواروں سمیت مجموعی طور پر 30 امیدوار ضمنی الیکشن لڑ رہے ہیں۔

واضح رہے کہ این اے 249 میں ضمنی انتخاب پاکستان تحریکِ انصاف کے فیصل واؤڈا کے مستعفی ہونے پر ہو رہے ہیں جبکہ فیصل واؤڈا سینیٹر منتخب ہونے پر قومی اسمبلی کی اس نشست سے مستعفی ہوئے تھے۔